پاکستانی بہنیں ’لیبہ اور ثنا‘ غلطی سے آ گئیں ہندوستان، تحائف کے ساتھ ہوئی وطن واپسی

مقبوضہ کشمیر سے تعلق رکھنے والی دو کمسن بچیوں، جو اتوار کی صبح ہندوستانی حدود میں نادانستہ طور پر داخل ہوئی تھیں، کو حکام نے پیر کے روز ضلع پونچھ کے چکن دا باغ علاقے کے راستے واپس وطن روانہ کیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جموں: جموں و کشمیر کے ضلع پونچھ میں لائن آف کنٹرول پر اتوار کی صبح ہندوستانی حدود میں نادانستہ طور پر داخل ہونے والی پاکستان مقبوضہ کشمیر کی دو کمسن بہنوں کو پیر کے روز حکام نے واپس اپنے وطن بھیج دیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پاکستان زیر قبضہ کشمیر سے تعلق رکھنے والی دو کمسن بچیوں، جو اتوار کی صبح ہندوستانی حدود میں نادانستہ طور پر داخل ہوئی تھیں، کو حکام نے پیر کے روز ضلع پونچھ کے چکن دا باغ علاقے کے راستے سے واپس وطن روانہ کیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ کمسن بچیوں کو تحائف کے ساتھ واپس اپنے وطن بھیج دیا گیا۔

دریں اثنا گھر واپسی سے قبل ایک بہن اپنے ایک ویڈیو بیان میں کہتی ہیں کہ ہمارے ساتھ بہت اچھا سلوک کیا گیا۔ بچی نے کہا کہ ’’ہم اپنے گھر سے بھٹک کر ادھر پہنچے، ہمیں پکڑا گیا اورپھر تھوڑی بہت پوچھ تاچھ کی گئی۔ ہم نے سوچا تھا کہ یہ لوگ ہمیں ماریں گے لیکن انہوں نے ہمارے ساتھ بہت اچھا سلوک کیا۔‘‘ بچی نے مزید کہا کہ ’’ہمیں ان لوگوں (فوج) نے اپنے پاس رکھا اور ہمیں کھانا کھلایا۔ ہم سوچتے تھے کہ ہمیں واپس جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی لیکن ہمیں بہت جلد ہی اپنے گھر واپس جانے کی اجازت مل گئی۔‘‘

پاکستانی بہنیں لیبہ اور ثنا
پاکستانی بہنیں لیبہ اور ثنا
تصویر سوشل میڈیا

واضح رہے کہ پاکستان زیر قبضہ کشمیر کی دو لڑکیاں لیبہ زبیر، عمر 17 سال اور ثنا زبیر، عمر 13سال ساکنان عباس پور تحصیل کہوٹہ اتوار کی صبح نادانستہ طور پر پونچھ سیکٹر کے راستے بھارتی حدود میں داخل ہوئی تھیں۔ واقعے کے بعد جموں میں تعینات ایک دفاعی ترجمان نے کہا تھا کہ لائن آف کنٹرول کے پونچھ سیکٹر میں نادانستہ طور پر ہندوستانی حدود میں داخل ہونے والی پاکستان زیر قبضہ کشمیر کی دو کمسن لڑکیوں کی فوری گھر واپسی یقینی بنانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔