قومی

ہندو عقیدتمندوں کے لئے ’شاردا مندر کوریڈور‘ بھی کھولے گا پاکستان

شاردا مندر ہندوؤں کا ایک مشہور مندر ہے۔ یہ مندر تقریباً پانچ ہزار سال پرانا ہے اور مہاراجہ اشوک کے دور میں اس کی تعمیر ہوئی تھی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان نے پنجاب کے ضلع نارووال میں واقع گرودوارہ دربار صاحب اور ہندوستان کے ضلع گرداس پور کے ڈیرہ بابا نانک کوریڈور پر رضامندی کے بعد پیر کے روز پاکستان کے مقبوضہ کشمیر میں شاردا مندر کوریڈور کو بھی ہندو عقیدتمندوں بالخصوص پڑوسی ملک کے زائرین کے لئے کھولنے کی اجازت دے دی۔

دی ایکسپریس ٹریبیون نے پاکستانی وزارت خارجہ کے حوالے سے بتایا ہے کہ ہندوستانی وزارت خارجہ پہلے ہی اس کوریڈور کو کھولنے کی پیشکش کرچکی ہے۔ وزارت خارجہ کے ذرائع نے کہا کہ "کرتارپور کے بعد ہندو عقیدتمندوں کے لئے یہ بڑی خبر ہے۔ سرکاری افسران علاقے کا دورہ کر کے وزیر اعظم کو رپورٹ سونپیں گے"۔

شاردا مندر ہندوؤں کا ایک مشہور مندر ہے۔ یہ مندر تقریباً پانچ ہزار سال پرانا ہے اور مہاراجہ اشوک کے دور میں اس کی تعمیر ہوئی تھی۔ مندر کے قریب ایک تالاب ہے جسے "مادومتی" کے نام سے یاد کیا جاتا ہے اور اس کا پانی ہندو طبقے کے لیے کٹاس راج مندر کے پانی کی طرح بہت اہمیت رکھتا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف کے قومی اسمبلی کے رکن ڈاکٹر رمیش کمار نے اخبار سے کہا کہ "پاکستان نے شاردا مندر کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔ میں دو دن کے اندر مندر کے دورے پر جا رہا ہوں۔ میں وزیر اعظم کو اس سلسلے میں رپورٹ بھیجوں گا۔ اس منصوبے پر رواں سال میں ہی کام شروع ہو جائے گا اور اس کے بعد پاکستان میں رہنے والے ہندو بھی یہاں کی زیارت پر جا سکیں گے"۔