پاکستان سوشل میڈیا کا استعمال کرکے نوجوانوں کو بہکا رہا ہے: جموں کشمیر پولس

دلباغ سنگھ نے کہا کہ پاکستان بے بنیاد کہانیاں گڑھ کے یہاں کے نوجوانوں کے ذہنوں میں انتہا پسندی کو پروان چڑھاتا ہے اور یہا ں مختلف ملی ٹنٹ تنظیمیں پاکستان کے اشاروں پر ہی سرگرم عمل ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جموں: جموں کشمیر پولس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے پاکستان کو ریاست میں پراکسی جنگ کو فروغ دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان سوشل میڈیا کا استعمال کرکے یہاں نوجوانوں کے ذہنوں میں انتہا پسندی کو پروان چڑھا رہا ہے اور ملک کے خلاف غلط فہمی پر مبنی ایک مربوط مہم بھی چلا رہا ہے۔

ان باتوں کا اظہار انہوں نے گذشتہ شام یہاں ریاست کے دورے پر آئے فارن آرمڈ فورسز اور سیول سروسز کے ایک گروپ کے ساتھ ملاقات کے دوران کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بے بنیاد کہانیاں گڑھ کے یہاں کے نوجوانوں کے ذہنوں میں انتہا پسندی کو پروان چڑھاتا ہے اور یہا ں مختلف ملی ٹنٹ تنظیمیں پاکستان کے اشاروں پر ہی سرگرم عمل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان لگاتار ریاست میں ملی ٹینسی کی مدد بھی کررہا ہے اور ان کو مستحکم بھی بنارہا ہے۔

متذکرہ گروپ نے پولس ہیڈ کواٹرس جموں کا بھی دورہ کیا جہاں انہوں نے فوج اور پولس کے اعلیٰ افسروں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔

اس موقعہ پر اے آئی جی ہیڈ کواٹرس مبشر لطیفی نے گزشتہ برسوں کے دوران ریاست میں امن وقانون کی بحالی اور ملی ٹینسی کی روک تھام کے لئے پولس کی کارکردگیوں کا خاکہ کھینچا۔

بعد ازاں سوال وجواب کے دوران بھی وہاں موجود فوج وپولس کے افسروں نے ریاست میں ملی ٹینسی کی روک تھام اور انتہاپسندی کے رجحان کو روکنے کے لئے فوج اور پولس کی طرف سے کیے جا رہے اقدام کو اجا گر کیا۔ قابل ذکر ہے کہ قومی سلامتی اور اسٹریٹیجک اسٹیڈیز پر فارن آرمڈ فورسز اور سیول سروسز کا ایک گروپ ریاست کے دورہ پر ہے۔ منگل کے روز اس گروپ نے پولس ہیڈ کواٹرس جموں کا دورہ کیا اور ریاست کے پولس سربراہ دلباغ سنگھ کے ساتھ بھی ملا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔