مایاوتی کے انکار کے بعد مختار کو اویسی کی پارٹی کی پیش کش ’یوپی میں جہاں سے چاہیں ٹکٹ لے لیں‘

بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی کی جانب سے مختار انصاری کو ٹکٹ نہیں دئے جانے کے اعلان کے بعد اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسد الدین اویسی نے زورآور رکن اسمبلی کو کہیں سے بھی انتخاب لڑنے کی پیش کش کی ہے

مختار انصاری، تصویر آئی اے این ایس
مختار انصاری، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

لکھنؤ: بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے جمعہ کے روز اپنے ایک اعلان میں کہا ہے کہ ان کی پارٹی آئندہ اسمبلی انتخابات میں کسی بھی زورآور یا مافیا کو ٹکٹ نہیں دیں گی۔ مایاوتی نے مختار انصاری کو ٹکٹ نہیں دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ مئو سے اس مرتبہ بی ایس پی کے ریاستی صدر بھیم راجبھر کو امیدوار بنایا جائے گا۔

مایاوتی کے مختار انصاری کو اسمبلی انتخابات میں امیدوار نہیں بنائے جانے کے اعلان کے بعد اسد الدین اویسی نے کہا کہ مختار انصاری اتر پردیش کی جس سیٹ سے چاہتے ہیں، وہاں سے ان کی پارٹی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑ سکتے ہیں۔

قبل ازیں، مایاوتی نے کہا، ’’آئندہ یوپی اسمبلی انتخابات میں بی ایس پی کی کوشش ہوگی کہ کسی بھی زورآور یا مافیا وغیرہ کو پارٹی سے انتخابی میدان میں نہ اتارا جائے۔ اس کے پیش نظر مؤ سیٹ سے مختار انصاری نہیں بلکہ یوپی کے بی ایس پی کے صدر بھی راجبھر کو ٹکٹ دیا جائے گا۔‘‘


یوپی میں اسمبلی انتخابات سے پیش نظر اویسی پور طرح سرگرم نظر آ رہے ہیں۔ یوپی کی 100 سیٹوں پر امیدوار اتارنے کا اعلان کرنے والے اویسی اس مہینے کی 22، 25، 26 اور 30 تاریخ کو یوپی کے دورے پر رہے ہیں۔ اس دوران وہ سنبھل، الہ آباد، کانپور اور بہرائچ کا دورہ کریں گے۔

قابل ذکر ہے کہ حال ہی میں ایک اور زورآور لیڈر عتیق احمد کی بیوی شائستہ پروین اپنے کنبہ کے ساتھ اے آئی ایم آئی ایم میں شامل ہو چکی ہیں۔ گجرات واقع احمد آباد کی سابرمتی جیل میں بند عتیق احمد یوگی آدتہ ناتھ حکومت کے نشانے پر رہے ہیں۔

حال ہی میں مختار انصاری کے بڑے بھائی صبغت اللہ انصاری نے اپنے بیٹے کے ساتھ سماجوادی پارٹی میں شمولیت اختیار کی ہے۔ ایسے حالات میں یہ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مختار انصاری بھی سماجوادی پارٹی میں شامل ہو سکے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔