کسانوں کے حق میں ہماری جدوجہد جاری رہے گی، ہم ڈرنے والے نہیں: کمل ناتھ

ریاستی کانگریس صدر کمل ناتھ نے کہا کہ ہم کانگریسی ڈرنے والے نہیں ہیں۔ ہم لوگوں کی جدوجہد اسی طرح جاری رہے گی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ لاٹھی چارج میں متعدد کسان اور کانگریسی زخمی ہوئے ہیں۔

تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @INCMP
تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @INCMP
user

یو این آئی

بھوپال: مرکزی زرعی قانونوں کے خلاف میں مدھیہ پردیش کے دارالحکومت بھوپال میں آج مظاہرہ کرنے والے کانگریس رہنماؤں اور کارکنان کو منتشر کرنے کے لئے پولیس کو طاقت کا استعمال کرنا پڑا۔ اس دوران سابق وزیراعلی دگوجے سنگھ، سابق ریاستی صدر ارون یادو اور دیگر کانگریس رہنماؤں نے اپنی گرفتاریاں بھی دیں۔

اس سے پہلے یہاں کے جواہر چوک علاقے میں سابق وزیراعلی کمل ناتھ اور دیگر کانگریس رہنماؤں نے اپنے خطاب کے دوران تینوں مرکزی زرعی قوانین کی جم کر مخالفت کرتے ہوئے انہیں پوری طرح کسان مخالف قرار دیا۔ کمل ناتھ نے کہا کہ ان قانونوں کی وجہ سے کسان اپنی فصل کم از کم امدادی قیمت (ایم ایس پی) پر نہیں بیچ سکیں گے۔ کاروباریوں اور بڑے صنعت کاروں کے آگے کسان مجبور ہو جائیں گے۔ اس لئے کانگریس دہلی میں تحریک کر رہے کسانوں کے مطالبات کے ساتھ ہے اور قانون واپس لئے جانے چاہیے۔

خطاب کے بعد اپنے پہلے کے اعلان کے مطابق کانگریس رہنما اور کارکنان جلوس کی شکل میں راج بھون کی طرف بڑھ رہے تھے، تبھی روشن پورا چوراہے سے پہلے ہی بیریکیڈ لگائے بیٹھی پولیس نے انہیں روک لیا اور آگے نہیں بڑھنے دیا۔ اس دوران پولیس نے آنسو گیس کے گولے چھوڑے اور واٹرکینن کا استعمال کیا۔ کچھ کارکنان کو بڑھنے سے روکنے کے لئے پولیس کو طاقت کا بھی استعمال کرنا پڑا۔

یہیں پر پولیس نے سابق وزیراعلی دگوجے سنگھ، سابق ریاستی صدر ارون یادو، سینئر رکن کنال چودھری اور دیگر رہنماؤں اور کارکنان کی گرفتاری کا اعلان کیا۔ بعد میں ان سبھی کو رہا بھی کر دیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی مظاہرہ ختم ہوگیا۔

اس دوران ریاستی کانگریس صدر کمل ناتھ نے ٹوئٹ کرکے الزام لگایا ہے کہ بھوپال میں پرامن طریقے سے مظاہرہے کرنے والے کسانوں اور کانگریسیوں پر پولیس نے شیوراج حکومت کے اشارے پر لاٹھی چارج کیا، آنسو گیس کے گولے اور واٹرکینن کا استعمال کیا گیا۔ انہوں نے اس کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہم کانگریسی اس سے ڈرنے والے نہیں ہیں۔ ہم لوگوں کی جدوجہد اسی طرح جاری رہے گی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ لاٹھی چارج میں متعدد کسان اور کانگریسی زخمی ہوئے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔