رام نومی کے موقع پر گجرات کے دو شہروں میں فرقہ وارانہ تصادم، ایک شخص ہلاک

پولیس سپرنٹنڈنت نے بتایا کہ ’’ایک نامعلوم شخص کی لاش کھمبھاٹ سے برآمد ہوئی۔ مرنے والے شخص کی عمر تقریباً 65 سال معلوم ہوتی ہے۔‘‘

علامتی تصویر، سوشل میڈیا
علامتی تصویر، سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

رام نومی کے موقع پر گجرات میں فرقہ وارانہ تصادم ہوا جس میں ایک شخص کے ہلاک ہونے کی خبر ہے۔ یہ تصادم رام نومی کے موقع پر نکالے گئے جلوس کے دوران ہوا۔ کھمبھاٹ اور ہمت نگر شہر میں یہ تصادم سامنے آیا جس میں دو فرقوں کے درمیان تشدد ہوا۔ خبروں کے مطابق وشو ہندو پریشد نے ہمت نگر میں رام نومی کا جلوس نکالا اور کہا یہ جا رہا ہے کہ کچھ شرپسندوں نے جلوس پر پتھراؤ شروع کر دیا جس کے بعد زبردست ہنگامہ ہوا۔ شرپسندوں نے سڑک پر کئی گاڑیوں کو نذر آتش کر دیا اور دکانوں کو آگ لگا دی گئی۔ واضح رہے ko پولیس نے ہنگامہ آرائی کرنے پر 15 سے زائد افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

حکام نے بتایا کہ تصادم کرنے والے گروپوں نے دونوں جگہوں پر پتھراؤ اور آتش زنی کی اور پولیس کو حالات پر قابو پانے کے لیے آنسو گیس کے گولے داغنے پڑے۔ واضح رہے کہ کھمبھاٹ شہر آنند ضلع میں واقع ہے، اور ہمت نگر سابر کانٹھا ضلع میں واقع ہے۔


خبروں کے مطابق پولیس سپرنٹنڈنت نے بتایا کہ ’’ایک نامعلوم شخص کی لاش کھمبھاٹ سے برآمد ہوئی۔ مرنے والے شخص کی عمر تقریباً 65 سال معلوم ہوتی ہے۔ اتوار کی دوپہر کے آخر میں رام نومی کے جلوس کے دوران دونوں فرقوں کے درمیان تصادم ہوا اور دونوں گروہوں کے لوگوں نے ایک دوسرے کے اوپر پتھراؤ کیا۔‘‘

حکام نے کہا کہ واقعے کے دوران ایک شخص زخمی بھی ہوا۔ خبروں کے مطابق شرپسندوں نے دکان کے کچھ کیبنس کو آگ لگا دی۔ کہا یہ جا رہا ہے کہ متوفی کی موت دنگے میں ہوئے زخموں کی وجہ سے ہوئی ہے۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ نے بتایا کہ معاملہ کی جانچ ہو رہی ہے ۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔