جیا بچن کے خلاف سریندر سنگھ کے تبصرہ پر سرجے والا برہم، کہا- ’ کیا بی جے پی لیڈران کو خواتین کی تذلیل کا لائسنس حاصل ہے‘

رندیپ سنگھ سرجے والا نے ہفتہ کے روز کہا کہ یہ بیان بی جے پی لیڈروں کی ذہنیت کا عکاس ہے اور اس سے خواتین کے تئیں بی جے پی کا مکروہ اور نفرت انگیز چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔

آر ایس سرجے والا / آئی اے این ایس
آر ایس سرجے والا / آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کانگریس لیڈر رندیپ سرجے والا نے سماج وادی پارٹی کی رہنما اور بالی ووڈ اداکارہ جیا بچن پر متنازعہ تبصرہ کرنے پر بی جے پی کے رکن اسمبلی سریندر سنگھ کو نشانہ بنایا۔ کانگریس جنرل سکریٹری رندیپ سنگھ سرجے والا نے ہفتہ کے روز کہا کہ یہ بیان بی جے پی لیڈروں کی ذہنیت کا عکاس ہے اور اس سے خواتین کے تئیں بی جے پی کا مکروہ اور نفرت انگیز چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا کرناٹک کے ایک رکن اسمبلی کے بیان پر ٹی وی پر بحث کرنے والے تمام اینکر ساتھی اب یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ سے معافی اور کارروائی کا مطالبہ کریں گے یا پھر بی جے پی کو خواتین کی تذلیل کا لائسنس حاصل ہے؟


غور طلب ہے کہ متنازعہ بیانات کی وجہ سے اکثر سرخیوں میں رہنے والے بی جے پی کے رکن اسمبلی سریندر سنگھ نے سماج وادی پارٹی کی رکن پارلیمنٹ جیا بچن پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا تھا 'پہلے سنیاسی شراپ (بددعا) یا آشیرواد (دعا) دیا کرتے تھے لیکن اب کلیوگ (دور جدید) میں رقاصہ بھی کوسنے لگی ہے۔'

بی جے پی کے رکن اسمبلی سریندر سنگھ نے کہا کہ یہ کلیوگ کی اصل تصویر ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر دگوجے سنگھ کی دوسری شادی پر بھی تبصرہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ لڑکیوں کی شادی کی عمر 21 سال ہونی چاہیے لیکن اس کے ساتھ ہی مردوں کے لیے 50 سال کے بعد شادی نہ کرنے کا قانون بھی ہونا چاہیے، کیونکہ یہ بھی ایک سماجی برائی ہے۔


خیال رہے کہ حال ہی میں پارلیمنٹ میں جیا بچن نے بی جے پی ممبران پارلیمنٹ پر اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے ان پر ایشوریہ رائے بچن کے بارے میں ذاتی تبصرہ کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔ اس دوران انہوں نے بی جے پی ممبران پارلیمنٹ کو بد دعا دیتے ہوئے کہا تھا کہ جلد ہی ان کے برے دن آنے والے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔