سرکردہ مسلم خواتین کو نشانہ بنانے والا اوم کیشور گرفتار، ’سُلی ڈیل ایپ‘ معاملہ میں پہلی گرفتاری

بُلی بائی ایپ معاملہ میں گرفتار کلیدی ملزم نیرج سے پوچھ گچھ کے بعد ’سُلی ڈیل‘ معاملہ میں بھی کارروائی ہوئی ہے، معاملہ کا کلیدی ملزم اوم کیشور مدھیہ پردیش کے شہر اندور سے گرفتار ہوا ہے

تصویر بشکریہ آج تک
تصویر بشکریہ آج تک
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: بلی بائی ایپ کے سلسلہ میں کلیدی ملزم سمیت تین افراد کو گرفتار کرنے کے بعد اب سلی ڈیل معاملہ میں بھی پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے پہلی گرفتار کی ہے۔ پولیس نے سلی ڈیل ایپ معاملہ میں کلیدی ملزم اوم کیشور ٹھاکر کو مدھیہ پردیش کے شہر اندور سے گرفتار کیا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق اوم کیشور بی سی اے کا طالب علم ہے اور اس نے گزشتہ سال جولائی میں سلی ڈیل ایپ تیار کی تھی۔ اس ایپ پر سرکردہ مسلم خواتین کے بارے میں نازیبا باتیں لکھی گئی تھیں اور ان کی قابل اعتراض تصاویر بھی ڈالی گئی تھیں۔ اتنا ہی نہیں اس ایپ پر مسلم خواتین کو نیلامی کے لئے پیش کیا گیا تھا۔

آج تک کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملزم نے پوچھ گچھ میں انکشام کیا ہے کہ سلی ڈیل معاملہ میں اس کے علاوہ کئی دسرے لوگ بھی شامل ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مستقبل قریب میں اس معاملہ میں مزید گرفتاریاں کی جا سکتی ہیں۔


خیال رہے کہ بلی بائی ایپ تیار کرنے کے ملزم نیرج بشنوئی کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور وہ 7 دن کے لئے دہلی پولیس کی اسپیشل آئی ایف ایس او یونٹ کی حراست میں ہے۔ پولیس نے ملزم سے پوچھ گچھ کی بنیاد پر سلی ڈیل معاملہ میں اندور سے اوم کیشور ٹھاکر کو گرفتار کیا ہے۔ اس سے فی الحال پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

بلی بائی ایپ کو بھی سلی ڈیل کی طرز پر ہی تیار کیا گیا تھا۔ اس پر بھی سرکردہ مسلم خواتین کو نشانہ بنایا جا رہا تھا۔ ان کے خلاف نفرت پھیلائی جا رہی تھی اور نازیبا باتیں لکھی گئی تھیں۔ ان دونوں ایپس کو ’گِٹ ہب‘ نامی پلیٹ فارم پر لانچ کیا گیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 09 Jan 2022, 1:01 PM