اعظم خان پر درج مقدمات کی تعداد 81، تین گرفتاری وارنٹ بھی جاری

رامپور ضلع انتظامیہ اعظم خان کو زمین مافیا قرار دے چکی ہے اور مجموعی طور پر ان کے خلاف 81 مقدمات درج کئے گئے ہیں۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

رامپور: سماجوادی پارٹی (ایس پی) کے رکن پارلیمان اور سینئر رہنما اعظم خان کے خلاف یو پی حکومت کی طرف سے کی جا رہی کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ رامپور ضلع انتظامیہ اعظم خان کو زمین مافیا قرار دے چکی ہے اور مجموعی طور پر ان کے خلاف 81 مقدمار درج کئے گئے ہیں۔

رامپور کے ایس پی (سپرنٹنڈنٹ آف پولس) اجے پال شرما نے بتایا، ’’سماجوادی پارٹی کے رکن پارلیمان اعظم خان کے خلاف کل 81 مقدمات درج ہو چکے ہیں، جبکہ ان کے خلاف 3 گرفتاری وارنٹ بھی جاری کئے جا چکے ہیں۔ ان میں سے ایک معاملہ جیہ پردا کے خلاف قابل اعتراض تبصرہ سے وابستہ ہے۔‘‘

انہوں نے بتایا کہ اعظم خان پر رامپور میں کسانوں کی زمینوں پر غیر قانونی قبضہ کے علاوہ، بھینس، کتابوں اور بجلی کی چوری کے مقدمات بھی درج ہو چکے ہیں۔ اس کے بعد اب گرفتاری وارنٹ جاری کیا گیا ہے۔

اعظم خان پر بجلی کے ساتھ پانی کی چوری کا بھی الزام ہے۔ اعظم خان اور ان کی اہلیہ راجیہ سبھا کی رکن تزئین فاطمہ کے خلاف بجلی چوری کی رپورٹ درج کی گئی ہے۔ ریزارٹ کی بجلی کاٹ دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ ٹیوب ویل کے آپریٹر کلب علی کو معطل کر دیا گیا ہے۔ چک روڑ کی زمین محمد علی جوہر یونیورسٹی کو دینے کے معاملہ میں قانون گو مہیپال سنگھ کو معطکل در دیا گیا ہے۔

بی جے پی کے رہنما آکاش سکسینہ نے ضلع مجسٹریٹ انجنی کمار سنگھ سے شکایت کی تھی کہ اعظم خان کے ریزارٹ میں بجلی چوری کی جا رہی ہے اور سرکاری رقم سے دو ٹیوب ویل لگوائی گئی ہیں۔ ان سے پانی کی سپلائی صرف ریزارٹ اور کھیتوں کے لئے کی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ ریزارٹ میں 50 سے زیادہ اے سی لگے ہیں لیکن بجلی کنکشن پر صرف 5 کلوواٹ لوڈ کی منظوری ہے۔

اس کے بعد ضلع مجسٹریٹ کے حکم پر سینچائی اور بجلی کے محکمہ کے افسروں کی ٹیم نے ایس ڈی ایم پریم پرکاش تیواری کی سربراہی میں جمعرات کو ریزارٹ پر چھاپہ مارا۔ ضلع مجسٹریٹ نے بتایا ، ’’ریزارٹ کے اندر ٹیوب ویلز لگی ہیں۔ ایک کھیتوں کی سینچائی کے لئے ہے اور دوسری پانی کی ٹینکی کے لئے۔ ٹینکی عوامی طور پر تعمیر کی گئی ہے لیکن اس سے گاؤں والوں کو پانی نہیں دیا جاتا ۔ اسی طرح سینچائی کے لئے لگی ٹیوب ویل سے بھی صرف اعظم خان کے کھیتوں کی سینچائی ہو رہی ہے۔‘‘

بجلی محکمہ کے جے ای (جونئر انجینئر) بھیشم کمار تومر نے بتایا، ’’ریزارٹ میں 5 کلو واٹ کا کنکشن اعظم خان کی بیوی کے نام ہے۔ اس کے باوجود بجلی کے گھمبے پر سیدھے کیبل ڈال کر بجلی چوری کی جا رہی تھی۔ اس کے لئے شہر کوتوالی میں تزئین فاطمہ کے خلاف رپورٹ درج کرائی گئی ہے۔‘‘