نوح تشدد: وی ایچ پی کا 28 اگست کو پھر یاترا نکالنے کا اعلان، انٹرنیٹ خدمات معطل

نوح ضلع انتظامیہ نے وی ایچ پی اور دیگر ہندو تنظیموں کو 28 اگست کو دوبارہ یاترا نکالنے کی اجازت نہیں دی ہے لیکن ہندو تنظیمیں یاترا نکالنے پر بضد ہیں

<div class="paragraphs"><p>نوح تشدد / Getty Images</p></div>

نوح تشدد / Getty Images

user

قومی آوازبیورو

نوح: ہریانہ کے نوح میں انٹرنیٹ خدمات دوبارہ بند کر دی گئی ہیں۔ محکمہ داخلہ نے ضلع میں ہفتہ کی دوپہر 12 بجے سے 28 اگست کی رات 12 بجے تک موبائل انٹرنیٹ خدمات اور بلک ایس ایم ایس پر پابندی عائد کر دی ہے۔ وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) کی جانب سے نوح میں 28 اگست کو دوبارہ برجمنڈل یاترا نکالنے کے اعلان کے پیش نظر محکمہ داخلہ نے یہ فیصلہ احتیاطی اقدام کے طور پر لیا ہے۔

نوح ضلع انتظامیہ نے وی ایچ پی اور دیگر ہندو تنظیموں کو 28 اگست کو دوبارہ یاترا نکالنے کی اجازت نہیں دی ہے لیکن ہندو تنظیمیں یاترا نکالنے پر بضد ہیں۔

نوح کے ڈی سی دھیریندر کھڈگتا نے 25 اگست کو محکمہ داخلہ کو ایک خط لکھ کر ضلع میں موبائل انٹرنیٹ خدمات اور بلک ایس ایم ایس سروس پر پابندی لگانے کی سفارش کی تھی تاکہ برج منڈل یاترا نکالے جانے کی صورت میں کسی بھی قسم کے تشدد اور افواہوں کو روکا جا سکے۔


ڈی سی نے اپنے خط میں 25 اگست سے ہی ان خدمات پر پابندی لگانے کی سفارش کی تھی۔ نوح ڈی سی نے وزارت داخلہ کے ایڈیشنل چیف سکریٹری کو لکھے گئے خط کی ایک کاپی اے ڈی جی پی، انٹیلی جنس ونگ، ہریانہ پولیس کو بھی بھیجی تھی۔

ڈی سی کا خط ملنے کے بعد محکمہ داخلہ نے 25 اگست کو یہ خدمات بند نہیں کیں لیکن آج یعنی 26 اگست کی صبح ہریانہ کے ہوم سکریٹری نے ضلع نوح میں 26 اگست کی دوپہر سے 28 اگست کی درمیانی رات تک موبائل انٹرنیٹ سروس بند کرنے کے احکامات جاری کر دیئے۔

اس سے قبل 31 جولائی کو نوح میں ہندو تنظیموں کی برج منڈل یاترا کے دوران تشدد ہوا تھا جس میں 6 افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔ اس کے بعد 31 جولائی سے 13 اگست تک ضلع نوح میں موبائل انٹرنیٹ سروس بند رکھی گئی۔ معمولات زندگی بحال ہونے کے بعد 13 اگست کی نصف شب 12 بجے انٹرنیٹ خدمات بحال کی گئیں۔


دوسری جانب ہندو تنظیموں نے اعلان کیا ہے کہ وہ 28 اگست کو نوح میں برج منڈل یاترا ضرور نکالیں گی۔ اگرچہ انتظامی ذرائع نے ضلع میں کشیدگی اور G-20 کانفرنس کے پیش نظر یاترا ملتوی کرنے کا دعویٰ کیا ہے لیکن وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) نے اس کی تردید کی ہے۔ وی ایچ پی نے کہا ہے کہ برج منڈل یاترا کسی بھی حالت میں 28 اگست کو مکمل کی جائے گی۔

وی ایچ پی کے قومی جوائنٹ جنرل سکریٹری سریندر جین نے کہا کہ ’’28 اگست کو نوح میں پوری طاقت کے ساتھ برج منڈل یاترا نکالی جائے گی۔ اس یاترا کا مقصد ضلع نوح کی انتظامیہ کو پریشان کرنا نہیں ہے۔ یاترا جلابھیشیک کے لیے نکالی جائے گی اور یہ ہمارا آئینی حق ہے۔ اگر انتظامیہ چاہے تو ہم یاترا میں لوگوں کی تعداد اور یاترا کی نوعیت کو تبدیل کرنے کے لیے تیار ہے لیکن یاترا ہر حال میں ہوگی۔‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;