سبھی کو ہندو دھرم میں واپس لاؤ، مندروں اور مٹھوں کے لئے طے ہو ہدف: تیجسوی سوریہ

بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ تیجسوی سوریہ نے ہری دوار میں نفرت انگریز تقاریر معاملے کے بعد ایک متنازعہ بیان دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مندروں اور مٹھوں کے لئے مذہب تبدیل کرانے کا ہدف طے ہونا چاہیے۔

تیجسوی سوریہ، تصویر ویڈیو گریب
تیجسوی سوریہ، تصویر ویڈیو گریب
user

یو این آئی

ہری دوار اور رائے پور کے بعد بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ تیجسوی سوریہ کا ایک بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ ہندوؤں کے سامنے واحد راستہ ہے کہ سبھی کو ہندو بنایا جائے۔ 25 دسمبر کو ایک تقریب میںانہوں نے کہا کہ "ہندوؤں کے سامنے واحد ایک راستہ یہی کہ ان تمام لوگوں کو ہندو مذہب میں واپس لایا جائے جنہوں نے اپنا مادری مذہب چھوڑ دیا ہے۔" وہ یہیں نہیں رکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہر سال مندروں اور مٹھوں کا ہدف طے کیا جانا چاہئے کہ انہوں نے کتنے لوگوں کا مذہب تبدیل کیا۔

خیال رہے کہ تیجسوی سوریہ اپنے متنازعہ بیانات کی وجہ سے اکثر بحث میں رہتے ہیں۔ ان کے اس بیان کو اس نقطہ نظر سے دیکھا جا رہا ہے جس میں آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت نے کہا تھا کہ تمام ہندوستانیوں کا ڈی این اے ایک جیسا ہے اور وہ سب ہندو ہیں۔ سوریہ بی جے پی یووا مورچہ کے قومی صدر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صرف مذہب کی تبدیلی کو روکنے سے کام نہیں چلے گا۔ بلکہ اس وقت ہندو مذہب کو چھوڑنے والوں کو ترجیح دینی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ یہ سب کچھ ہندو مذہب کے مذہبی اور ثقافتی ورثے کو بچانے کے لیے نہایت ضروری ہے۔


سوریہ نے کہا کہ ہندو اپنی سیاسی طاقت کا استعمال کریں۔ وہ یہیں نہیں رکے، ان کا مزید کہنا تھا کہ جمہوریت میں عددی طاقت جہاں سیاسی طاقت دیتی ہے، وہیں آبادی کی طاقت ملک کے مستقبل کا فیصلہ کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہندوتوا کے بغیر ہندو مذہب کا وجود نہیں ہے۔ ہندوتوا نظریہ ہی ہمیں ہندومت پر حملہ کرنے والوں کے خلاف حملہ کرنا سکھاتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔