سی اے اے پر پیچھے ہٹنے کا سوال نہیں، اگلا منصوبہ ’دو بچوں کا قانون‘: موہن بھاگوت

آر ایس ایس کے سربراہ نے مراد آباد میں کہا کہ چاہے آرٹیکل 370 ہو یا سی اے اے کو نافذ کرنے کا فیصلہ ہو، ان سب پر آر ایس ایس حکومت کے فیصلے کے ساتھ پوری طرح کھڑی ہے اور اگلا منصوبہ دو بچوں کا قانون ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مراد آباد: راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے سرابراہ موہن بھاگوت کا کہنا ہے کہ سنگھ کا اگلا ایجنڈا ملک میں دو بچوں کا قانون بنوانا ہے۔ مراد آباد پہنچے آر ایس ایس کے سربراہ نے ایک تقریب کے دوران یہ بات کہی جہاں وہ آر ایس ایس کے متعدد ارکان کے سوالوں کے جواب دے رہے تھے۔

موہن بھاگو نے جمعرات کو ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ’’آر ایس ایس کا اگلا منصوبہ دو بچوں کا قانون ہے۔ ایسا آر ایس ایس کی رائے ہے، تاہم اس پر حتمی فیصلہ حکومت کو ہی کرنا ہے۔‘‘ دریں اثنا، رام مندر کے معاملے پر موہن بھاگوت نے کہا کہ اس معاملے میں سنگھ کا کردار ٹرسٹ کے قیام تک ہے، اس کے بعد سنگھ خود کو اس سے الگ کر لے گا۔ ایک سوال کے جواب میں سنگھ کے سربراہ نے کہا کہ کاشی متھورا نہ تو سنگھ کے ایجنڈے میں کبھی تھے اور نہ ہی کبھی ہوں گے۔

واضح رہے کہ آر ایس ایس سربراہ مراد آباد کے چار روزہ دورے پر ہیں اور انہوں نے یہاں پر ایم آئی ٹی آڈیٹوریم میں ’جگیاسا سیشن‘ سے خطاب کیا اور سنگھ کارکنان کے سوالوں کے جواب دئے۔۔ اس سیشن میں آر ایس ایس کی علاقائی ایگزیکٹو کے 40 چنندہ عہدیدار موجود تھے۔

سنگھ کا آئندہ کا لائحہ عمل کیا ہوگا اس سوال پر موہن بھاگوت نے کہا کہ دو بچوں کے لئے قانون ہونا چاہئے، لیکن اس پر فیصلہ حکومت کو لینا ہوگا۔ دریں اثنا، سی اے اے پر بھی موہن بھاگوت نے لب کشائی کی اور کہا کہ اس پر پیچھے ہٹنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ چاہے آرٹیکل 370 ہو یا سی اے اے کو نافذ کرنے کا فیصلہ ہو، ان سب پر آر ایس ایس حکومت کے فیصلے کے ساتھ پوری طرح کھڑی ہے۔