کوئی بھی شخص ٹیکہ کاری کے بغیر عدالت میں داخل نہیں ہو سکتا: جموں و کشمیر ہائی کورٹ

جموں و کشمیر ہائی کورٹ کے چیف جسٹس جسٹس پنکج متھل کی ہدایات کے مطابق کورٹ عمارتوں میں اب صرف ان لوگوں کو ہی داخل ہونے کی اجازت ہو گی جنہوں نے کورونا کے دونوں ویکسین لگوائے ہوں

جموں و کشمیر ہائی کورٹ
جموں و کشمیر ہائی کورٹ
user

یو این آئی

سری نگر: جموں و کشمیر ہائی کورٹ کے چیف جسٹس جسٹس پنکج متھل کی ہدایات کے مطابق کورٹ عمارتوں میں اب صرف ان لوگوں کو ہی داخل ہونے کی اجازت ہو گی جنہوں نے کورونا کے دونوں ویکسین لگوائے ہوں۔ انہوں نے جوڈیشل رجسٹراروں اور ضلع ججوں کو ہدایت دی ہیں کہ وہ کورٹ عمارتوں کی سینی ٹائزیشن ہفتے میں دو بار کرائیں۔

موصوف چیف جسٹس کی طرف سے جاری ایک حکمنامے میں کہا گیا کہ جموں وکشمیر اور لداخ یونین ٹریٹریوں بالخصوص وادی کشمیر میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز اور تیسری لہر کے خدشات کے پیش نظر ہائی کورٹ کی دونوں ونگس کے جوڈیشل رجسٹراروں اور تمام اضلاع کے پرنسپل ججوں کو ہدایات دی گئی ہیں کہ وہ ہائی کورٹ کی طرف سے جاری پروٹوکال پر سختی سے عمل درآمد کریں۔

حکمنامے میں تمام وکلا اور دیگر متعقلین سے تاکید کی گئی ہے کہ وہ اس پروٹوکال کو عملی جامہ پہنانے میں ہائی کورٹ اور ضلع کورٹ کے عہدیداروں کے ساتھ مکمل تعاون کریں۔


حکمنامے میں کہا گیا: ’جوڈیشل رجسٹرارز اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ رجسٹرار عہدیداروں و ملازمین اور وکلا کے بغیر کسی بھی شخص کو کورٹ عمارت میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور جن لوگوں نے کورونا ویکسین کے دونوں ٹیکے لگوائے ہوں اور ان کے پاس اس کی سرٹیفکیٹس ہوں ان کو داخل ہونے کی اجازت ہوگی‘۔

حکمنامے میں مزید کہا گیا کہ جوڈیشل رجسٹرار اور ضلع جج کورٹ عمارتوں کی سینی ٹائزیشن کو ہفتے میں دوبار یقینی بنائیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔