نہنگ جتھہ سنگھو بارڈر پر رہے گا: اجلاس کے بعد اعلان

متحدہ کسان مورچہ اور نہنگ جتھہ بندیوں کے درمیان رابطہ کاری کے لیے چھ رکنی کمیٹی بنانے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے جس میں تین تین ارکان دونوں جانب سے ہوں گے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

دہلی-ہریانہ سنگھو سرحد پر کسانوں کی مظاہرہ کے مقام کے قریب ایک کسان کے وحشیانہ قتل کے بعد تنازعہ میں گھرے نہنگ جتھہ بندیوں نے جمعرات کو اعلان کیا کہ وہ سنگھو سرحد نہیں چھوڑیں گے۔ نہنگ جتھ بندیوں نے یہ فیصلہ دو دن کی کانفرنس اور بحث کے بعد کیا ہے۔

جمعرات کو سنگھو بارڈر پر ایک پریس کانفرنس میں اس بات کا اعلان کرتے ہوئے نہنگ جتھہ بندیوں کے نمائندوں نےبتایا کہ پوری دنیا سے سکھ برادری کے لوگوں نے انہیں کسانوں کی تحریک کو نہ چھوڑنے کا مشورہ دیا ہے۔


نہنگ بابا راجہ رام سنگھ نے بتایاکہ "ماضی میں پیش آنے والے حادثے کے بعد ہمارے یہاں سے جانے کی باتیں ہو رہی تھیں۔ اس پر حتمی فیصلے کے لیے ہم نے 27 اکتوبر کو ایک میٹنگ بلائی تھی جس میں ہمیں ملک اور بیرون ملک کی تمام کمیونٹیز کے لوگوں کی بھرپور حمایت حاصل تھی۔ کچھ کسان لیڈروں نے بھی ہمارا ساتھ دیا ہے۔ متحدہ محاذ کی طرف سے بھی لوگ ہمارے پاس آئے۔ چاروں طرف سے وسیع حمایت ملنے کے بعد نہنگ جتھہ بندیوں نے کسانوں کی تحریک کو جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ "

بابا راجہ رام نے بتایاکہ "متحدہ کسان مورچہ اور نہنگ جتھہ بندیوں کے درمیان رابطہ کاری کے لیے چھ رکنی کمیٹی بنانے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے جس میں تین اراکین نہنگ جتھہ بندیوں سے اور تین سنیوکت کسان مورچہ سے ہوں گے۔ اس کے ساتھ ساتھ جب بھی کوئی مسئلہ یا شکایت ہوگی تو یہ چھ رکنی رابطہ کمیٹی اس کا حل نکالے گی۔ "

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔