نئی ڈیجیٹل ٹیکنالوجی جمہوری، انسانی اقدار پر مرکوز ہو: وزیر اعظم مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ انہیں سڈنی ڈائیلاگ میں مدعو کرنا نہ صرف ہندوستان کے لئے ایک اعزاز ہے بلکہ یہ ہند بحرالکاہل خطے اور ابھرتی ہوئی ڈیجیٹل دنیا میں ہندوستان کے مرکزی کردار کا اعتراف بھی ہے۔

پی ایم مودی، تصویر یو این آئی
پی ایم مودی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے دنیا میں ہو رہے ڈیجیٹل انقلاب میں جمہوری اقدار کی ناگزیریت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستان میں ڈیجیٹلائزیشن کے ذریعہ گورننس، شمولیت، بااختیار بنانے، رابطے اور فوائد کی منتقلی اور فلاحی اقدامات میں زبردست تبدیلیاں آرہی ہیں۔ پی ایم مودی نے پہلے سڈنی ڈائیلاگ میں کلیدی بیان میں سائبر ورلڈ کے موضوع پر بات کرتے ہوئے آگاہ کیا کہ مستقبل میں تکنیک کے تعلق سے دنیا کے تمام جمہوری ممالک کو انسانی اقدار کا خیال رکھنا ہوگا اور ٹیکنالوجی کے غلط استعمال کے امکانات سے نوجوان نسل کو بچانا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ انہیں سڈنی ڈائیلاگ میں مدعو کرنا نہ صرف ہندوستان کے لئے ایک اعزاز ہے بلکہ یہ ہند بحرالکاہل خطے اور ابھرتی ہوئی ڈیجیٹل دنیا میں ہندوستان کے مرکزی کردار کا اعتراف بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل دنیا میں ہمارے ارد گرد ہرچیز بدل رہی ہے۔ اس نے سیاست، معیشت اور معاشرے کی نئی تعریف کی ہے اور خودمختاری، حکمرانی، اخلاقیات، قانون، حقوق اور سلامتی کے بارے میں نئے سوالات اٹھائے ہیں۔ اس سے بین الاقوامی مسابقت، طاقت اور قیادت کو بھی نئے سرے سے ایک نئی شکل دی ہے۔


ہندوستان میں ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کی وجہ سے پانچ اہم تبدیلیوں کا ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ ہم دنیا کے سب سے زیادہ جامع عوامی معلومات کے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر کر رہے ہیں۔ 1.3 ارب ہندوستانیوں کے پاس ایک ڈیجیٹل شناخت ہے۔ ہم چھ لاکھ گاؤں کو براڈ بینڈ سے جوڑنے جا رہے ہیں۔ دوسرا- ہم ڈیجیٹل تکنیک کے ذریعہ حکمرانی، شمولیت، بااختیار بنانے، کنیکٹیویٹی، فوائد اور فلاحی اقدامات کی منتقلی کے ذریعے لوگوں کی زندگیوں کو بدل رہے ہیں۔ تیسرا - ہندوستان میں تیسرا سب سے تیزی سے ترقی کرنے والا اسٹارٹ اپ ماحولیاتی نظام ہے۔ ہر ہفتے نئے نئے یونیکورنس آ رہے ہیں اور وہ صحت وتعلیم سے لے کر قومی سلامتی تک ہر شعبے میں حل فراہم کر رہے ہیں۔ چوتھا۔ ہندوستان کی صنعت اور خدمات کے شعبے، خاص طور پر زراعت کے شعبے میں، بہت وسیع تبدیلیاں ہو رہی ہیں۔ ہم صاف توانائی، وسائل اور حیاتیاتی تنوع کے تحفظ کے لیے ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کا استعمال کر رہے ہیں۔ پانچواں۔ ہندوستان کو مستقبل کے لیے تیار کرنے کے لیے بہت بڑی سطح پر کوششیں جاری ہیں۔ ہم 5 جی اور6 جی جیسی ٹیلی کام ٹیکنالوجی میں مقامی صلاحیتوں کو فروغ دینے میں سرمایہ کاری کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہندوستان مصنوعی ذہانت (اے آئی) اور مشین لرننگ کے میدان میں کام کرنے والے سرکردہ ممالک میں سے ایک ہے، جو اے آئی کے انسانی مرکز اور اخلاقی استعمال پر کام کر رہا ہے۔ ہم کلاؤڈ پلیٹ فارمز اور کمپیوٹنگ میں مضبوط صلاحیتیں تیار کر رہے ہیں۔ یہی ہماری ڈیجیٹل خود مختاری اور پائیدار بنے رہنے کا منترہے۔ ہم کوانٹم کمپیوٹنگ میں عالمی معیار کی صلاحیتیں تیار کر رہے ہیں۔ ہمارا خلائی پروگرام ہماری معیشت اور سلامتی کا ایک اہم حصہ ہے۔ اس شعبے کو نجی سرمایہ کاری اور اختراعات کے لیے کھلا چھوڑ دیا گیا ہے۔


مودی نے کہا کہ ہندوستان پہلے سے ہی دنیا کے کارپوریٹ ورلڈ کو سائبر سیکورٹی حل اور خدمات فراہم کرنے کا ایک بڑا مرکز ہے۔ ہم نے ہندوستان کو سائبر سکوریٹی کے لئے ایک عالمی ہب بنانے کے لئے اپنی صنعتوں کے ساتھ ایک ٹاسک فورس تشکیل دی ہے۔ آج ٹیکنالوجی کی سب سے اہم پیداوار ڈیٹا ہے۔ ہندوستان میں، ہم نے ڈیٹا کے تحفظ، رازداری اورسکوریٹی کے لیے ایک مضبوط فریم ورک بنایا ہے۔ اس وقت ہم ڈاٹا کااستعمال لوگوں کو بااختیار بنانے کے لئے کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کو یہ سب کچھ جمہوری فریم ورک میں کرنے کا ایک لاجواب تجربہ ہے جس میں انفرادی حقوق کی مکمل ضمانت دی گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔