الہ آباد: دین دیال کے لئے نہرو کا مجسمہ ہٹایا گیا

الہ آباد میں نہرو کا مجسمہ کرین کی مدد سے ہٹا دیا گیا

آنند بھون کے نزدیک نصب نہرو کے مجسمہ کو مقامی انتظامیہ نے صرف اس لئے ہٹا دیا کیوں کہ انہیں پاس میں ہی نصب جن سنگھ کے سربراہ رہے دین دیال اپادھیائے کے مقام مجسمہ میں توسیع کرنی تھی۔

اتر پردیش کے الہ آباد میں پنڈت دین دیال اپادھیائے کے مجسمہ کے مقام کی توسیع کے لئے ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا مجسمہ ہٹا دیا گیا ہے۔ الہ آباد نہرو-گاندھی خاندان کا آبائی شہر ہے اور یہیں پر ان کی آبائی رہائش آنند بھون واقع ہے۔ اس معاملہ پر کانگریس کے رہنماؤں اور کارکنان کا غصہ پھوٹ پڑا اور انہوں نے ریاستی حکومت اور مرکزی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق، انتظامیہ کا کہنا ہے کہ چوراہے خوبصورتی بڑھانے کے لئے مجسمہ کو ہٹانا ضروری تھا۔ حالانکہ ان کے پاس اس بات کا کوئی جواب نہیں تھاکہ خوبصورتی کے لئے دین دیال اپادھیائے کے مجسمہ کو کیوں نہیں چھیڑا گیا؟ اس موقعہ پر ہنگامہ کر رہے کانگریس کے رہنماؤں نے کہا، ’’یہ ملک کی بدقسمتی ہے کہ ملک کے پہلے وزیر اعظم جواہر لال نہرو کے مجسمہ کو ہٹایا جا رہا ہے۔ ‘‘

کانگریس رہنماؤں نے سوال کیا ’’یہ کارروائی ایسی ہے گویا جوتے پہن کر کرین سے پھانسی دی جا رہی ہے۔ کیا ریاستی اور مرکزی حکومت ایک نظریہ کو ختم کرنے کے لئے اس طرح کی گھٹیاقسم کی کارروائی کرے گی! ‘‘

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب اپوزیشن پارٹی کے کسی رہنما کے مجسمہ کو ہٹایا گیا ہے، اس سے پہلے بھی کئی مرتبہ اس طرح کا تنازعہ ہوا ہے۔ بی جے پی پہلے ہی کانگریس سے پاک ہندوستان کا نعرہ دے چکی ہے۔ مانا جا رہا ہے کہ اپوزیشن پارٹی کے رہنماؤں کے مجسمے ہٹانا بی جے پی کے کانگریس سے پاک ہندوستان کے منصوبہ کا حصہ ہے۔

سب سے زیادہ مقبول