امیروں کو راحت تو غریبوں کو کیوں نہیں، حکومت ’نیائے‘ جیسی یوجنا شروع کرے: راہل

حکومت کو ’نیائے‘ جیسی اسکیم نافذ کرنے کی ضرورت ہے اور اسے کم از کم چھ مہینہ چلانے اور ہر غریب کنبہ کے بینک اکاونٹ میں 7,500روپے مہینہ ڈالنےکی ضرورت ہے

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

یو این آئی

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہاکہ گزشتہ تین مہینوں میں کورونا نے ملک کو برباد کردیا ہے اور غریب تباہ ہوگئے ہیں اس لئے حکومت کو غریبوں کی مدد کے لئے ’نیائے یوجنا‘ شروع کرنی چاہئے۔

مسٹر گاندھی نے منگل کو جاری ایک ویڈیو پیغام میں کہاکہ گزشتہ تین مہینوں میں کورونا نے ملک کی معیشت کو تباہ کرکے عوام کو زبردست چوٹ پہنچائی ہے جس سے لوگوں کا بہت نقصان ہوا ہے۔ سب سے زیادہ نقصان غریبوں، مزدوروں، درمیانی طبقہ اور نوکری پیشہ لوگوں کو ہوا ہے۔

کانگریس کے لیڈر نے کہا کہ اس حالت سے نپٹنے کے لئے انہوں نے حکومت کو ’نیائے‘ جیسی ایک اسکیم نافذ کرنے اور اسے کم از کم چھ مہینہ کے لئے چلانے اور ہر غریب کنبہ کے بینک اکاونٹ میں 7,500روپے مہینہ ڈالنے جیسے تین چار مشورے دے، لیکن حکومت نے منع کردیا اور ایک بار نہیں تین چار بار منع کیا اور پیسوں کا نہ ہونا اس کی وجہ بتائی۔

مسٹر گاندھی نے کہاکہ میں ملک کو یاد دلانا چاہتا ہوں کہ حکومت نے لاکھوں کروڑ روپے پندرہ سب سے امیر کرونی کیپٹلسٹس کا ٹیکس معاف کیا تھا اور گزشتہ تین مہینوں میں حکومت نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں اضافہ کیا ہے اور 22بار پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھائی گئی ہے۔ پیسے کی کوئی کمی نہیں ہے۔ تین لاکھ کروڑ روپے حکومت کے پاس ہیں، تو نریندر مودی جی ’نیائے‘ یوجنا جیسی اسکیم نافذ کیجئے، چھ مہینہ کے لئے چلائیے اور ہر غریب کنبہ کو 7,500روپے مہینہ دیجیے۔