کنگنا کے ’بھیک میں آزادی‘ والے بیان پر نواب ملک نے کہا ’لگتا ہے حشیش کا زیادہ استعمال کر کے بیٹھی تھیں‘

نواب ملک نے کہا کہ ہم اداکارہ کنگنا رانوت کے بیان کی سخت مذمت کرتے ہیں، مرکزی حکومت کو کنگنا سے پدم شری ایوارڈ واپس لینا چاہیے اور انھیں گرفتار کرنا چاہیے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رانوت کے ’بھیک میں آزادی‘ والے بیان کو لے کر اپوزیشن لگاتار حملہ آور ہے۔ این سی پی لیڈر نواب ملک نے کہا کہ کنگنا رانوت نے 2014 میں آزادی ملنے والی باتیں کہہ کر ہزاروں مجاہدین آزادی کی بے عزتی کی ہے۔

نواب ملک نے اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ ہم اداکارہ کے بیان کی سخت مذمت کرتے ہیں۔ مرکزی حکومت کو کنگنا سے پدم شری ایوارڈ واپس لینا چاہیے اور انھیں گرفتار کرنا چاہیے۔ انھوں نے مزید کہا کہ ایسا لگتا ہے جیسے کنگنا رانوت نے اس طرح کا بیان دینے سے پہلے ملانا کریم (حشیش، ایک خاص قسم کی ڈرگس جس کی پیداوار ہماچل میں ہوتی ہے) کی زبردست خوراک لے رکھی تھی۔


غور طلب ہے کہ کنگنا رانوت کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہو رہی ہے۔ اس میں اداکارہ کہتی ہوئی نظر آ رہی ہیں کہ 1947 میں جو آزادی ملی تھی، وہ بھیک تھی۔ اصل آزادی 2014 میں ملی۔ کنگنا کے اس بیان پر لوگ حیران ہیں اور انھیں تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔