اڈیشہ میں نوین پٹنائک اور نریندر مودی کی شراکت والی حکومت، جس سے کانگریس پارٹی لڑ رہی ہے: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے وزیر اعظم نریندر مودی اور اڈیشہ میں نوین پٹنائک کی قیادت والی بی جے ڈی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ریاست میں نریندر مودی اور نوین پٹنائک کی شراکت والی حکومت چل رہی ہے

<div class="paragraphs"><p>ویڈیو گریب</p></div>

ویڈیو گریب

user

قومی آوازبیورو

بھونیشور: کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے بدھ کو مرکز کی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی قیادت والی حکومت کے ساتھ ہی اڈیشہ میں بیجو جنتا دل (بی جے ڈی) کی حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ریاست میں وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اعلیٰ نوین سنگھ پٹنائک کی شراکت والی حکومت چل رہی ہے۔

اڈیشہ میں اپنی بھارت جوڈو نیائے یاترا کے دوسرے دن رورکیلا کے مضافات پنپوش چک کے قریب اپنے روڈ شو کے دوران ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ کانگریس آنے والے انتخابات میں بی جے پی اور بی جے ڈی دونوں پارٹیوں سے لڑے گی۔


انہوں نے ریاست کی نوین پٹنائک حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہاں بے روزگاری کی شرح ملک میں سب سے زیادہ ہے اور ریاست کے 30 لاکھ سے زیادہ لوگ کام کے لیے دوسری ریاستوں میں جا چکے ہیں۔ دوسری طرف باہر کے 30 کروڑ پتی تاجر ریاست کو لوٹ رہے ہیں۔ ریاستی حکومت قبائلیوں، دلتوں اور خواتین کے خلاف بڑھتے ہوئے مظالم کو روکنے میں بری طرح ناکام رہی ہے۔

راہل گاندھی نے کہا کہ ان کی بھارت جوڑو یاترا بی جے پی-آر ایس ایس اتحاد کے ذریعہ ملک میں پھیلائی جا رہی نفرت کے خلاف تھی اور بھارت جوڑو نیائے یاترا سماج میں ناانصافی کے خلاف۔ انہوں نے کہا، ’’میں ریاست کے لوگوں کی بات سننے کے لیے اڈیشہ آیا ہوں، جس کے لیے میں نے دن میں سات گھنٹے مختص کیے ہیں۔‘‘ انہوں نے اتنی بڑی تعداد میں آنے کے لیے اوڈیشہ کے لوگوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ آپ نے نفرت کے بازار میں محبت کی دکان کھول دی ہے۔


دریں اثنا، راہل گاندھی نے ایکس پر پوسٹ میں کہا، ’’بے روزگاری کی بیماری ملک بھر میں پھیل رہی ہے اور ہر ریاست اس بیماری سے بری طرح متاثر ہے۔ اوڈیشہ کے اعداد و شمار پر نظر ڈالیں- 40 فیصد نوجوان تعلیم اور آمدنی سے دور ہیں، ایک لاکھ سے زیادہ سرکاری اسامیاں خالی ہیں اور لاکھوں نوجوان نوکری کی تلاش میں ہیں۔‘‘

انہوں نے مزید لکھا، ’’اڈیشہ کے 30 لاکھ سے زیادہ نوجوان نوکریوں کی تلاش میں دوسری ریاستوں میں بھٹک رہے ہیں اور مودی دوست نوین پٹنائک کی سرپرستی میں باہر سے آئے ہوئے 30 ارب پتی صنعت کار ریاست کے وسائل کو لوٹ رہے ہیں۔ کانگریس کے ذریعہ بنائے گئے ملک کے بڑے پی ایس یوز بشمول ریل، سیل، پورٹ، ایئرپورٹ وغیرہ آج مودی کی 'متر نیتی' کی وجہ سے فروخت ہو رہے ہیں۔‘‘

راہل گاندھی نے کہا، ’’ہماری ترجیح جی ایس ٹی میں اصلاحات کر کے چھوٹی صنعتوں کے لیے نیا معاشی ماڈل تیار کرنا، اندھی نجکاری کو روک کر پی ایس یوز کو بحال کرنا اور خالی سرکاری آسامیوں کو پر کرنا ہے۔ کانگریس کا یہ وژن اڈیشہ سمیت پورے ملک میں روزگار پیدا کر سکتا ہے۔

(یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;