ناردا اسٹنگ آپریشن: بی جے پی رہنما اور سابق میئر شوبھن چٹرجی سی بی آئی کے سامنے پیش

ناردا اسٹنگ آپریشن معاملے میں کلکتہ کارپوریشن کے سابق میئر شوبھن چٹرجی سی بی آئی کے دفتر نظام پلس میں پہنچ کر اپنی آواز کا نمونہ دیا۔ اس موقع پر ان کے ساتھ خاتون دوست بیساکھی بنرجی بھی موجود تھیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

کولکاتا: ناردا اسٹنگ آپریشن معاملے میں کلکتہ کارپوریشن کے سابق میئر اور ترنمول کانگریس چھوڑ کر بی جے پی کا دامن تھام لینے والے شوبھن چٹرجی نے بدھ کے روز سی بی آئی کے دفتر نظام پلیس میں پہنچ کر اپنی آواز کا نمونہ دیا۔ اس موقع پر ان کے ساتھ ان کی خاتون دوست بیساکھی بنرجی بھی موجود تھیں۔ واضح رہے کہ بی جے پی میں شامل ہونے کے بعد شوبھن چٹرجی نے پہلی مرتبہ سی بی آئی کا سامنا کیا ہے۔

اس سے قبل سی بی آئی نے شوبھن چٹرجی کو نوٹس دیا تھا مگر وہ پیش نہیں ہوئے تھے اس وقت وہ دہلی میں تھے۔ 2016 میں سامنے آئے اس اسٹنگ آپریشن میں شوبھن چٹرجی کو ویڈیوفوٹیج میں روپے لیتے ہوئے دکھلایا گیا ہے۔سی بی آئی کے ذرائع کے مطابق ناردا نیوز پورٹل کے سی ای او میتھوز سیموئل کے بیان اور شوبھن چٹرجی کے بیان میں کوئی مماثلت نہیں ہے۔

ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ شوبھندو ادھیکاری کو بھی آج سی بی آئی کے سامنے پیش ہونا ہے۔سیموئل کو بھی جانچ ایجنسی نے آج ہی طلب کیا تھا مگر ذرائع کے مطابق وہ آج نہیں آئیں گے اور انہوں نے ای میل کے ذریعہ جانچ ایجنسی کو بتادیا ہے۔دوسری جانب ترنمول کانگریس کی ممبر پارلیمنٹ اپوروا پوتدار سی بی آئی کے دفتر میں حاضر ہوکر اپنی آواز کا نمونہ دیا۔سی بی آئی آواز کا نمونہ حاصل کرکے ویڈیو میں موجود آواز سے ملائے گی۔سی بی آئی نے کلکتہ ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کے بعد ہی ملزمین کے آواز کا نمونہ حاصل کررہی ہیں۔

سیموئل نے بتایا تھاکہ انہوں نے الکیمسٹ کمپنی کے مالک کے ڈی سنگھ جو ترنمول کانگریس کے راجیہ سبھا کے رکن رہ چکے ہیں کی مدد سے ہی اس اسٹنگ آپریشن کو انجام دیا تھا۔کے ڈی سنگھ سے بھی سی بی آئی پوچھ تاچھ کرچکی ہے۔خیال رہے کہ اس سے قبل سی بی آئی نے ریاستی وزیر سبرتو مکھرجی، سابق ریاستی وزیر مدن مترا، آئی پی ایس آفیسر ایس ایم مرزا اور سابق ڈپٹی میئر کلکتہ کارپوریشن اقبال احمد کی آواز کا نمونہ حاصل کرچکی ہے۔