مسجد-مندر میں پانچ سے زیادہ افراد کے داخلہ پر پابندی! رمضان سے قبل یوگی آدتیہ ناتھ کا اعلان

کورونا کے بڑھتے معاملوں کے درمیان اتر پردیش حکومت نے مذہبی مقامات پر بیک وقت پانچ سے زیادہ افراد کے جمع ہونے پر پابندی عائد کر دی

یوگی آدتیہ ناتھ، تصویر آئی اے این ایس
یوگی آدتیہ ناتھ، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

لکھنؤ: کورونا وائرس کے بڑھتے اثر کے درمیان اتر پردیش کی یوگی حکومت نے اتوار کے روز مذہبی مقامات پر بیک وقت پانچ سے زیادہ افراد کے جمع ہونے پر پابندی عائد کر دی۔ وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے افسران کو ہدایت دی کہ وہ یہ یقینی بنائیں کہ کسی بھی مذہبی مقام پر ایک بار میں پانچ سے زیادہ افراد داخل نہ ہونے پائیں۔

خیال رہے کہ 13 اپریل سے رمضان کی شروعات ہونے جا رہی ہے جبکہ 14 اپریل سے ہندووں کے نوراتر شروع ہوں گے۔ رمضان کے مہینے میں جہاں نمازیوں کی تعداد کافی بڑھ جاتی ہے وہیں عشا کے وقت تراویح کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے جس میں کافی تعداد میں لوگ شامل ہوتے ہیں۔ وہیں، نوراتر کے دنوں میں مندر جانے والے افراد کی تعداد بھی بڑھ جاتی ہے۔ ایسے حالات میں ریاستی حکومت کے فیصلہ سے کئی لوگوں کو مایوسی ہو سکتی ہے۔ تاہم حکومت کا موقف ہے کہ کورونا کی دوسری لہر خطرناک ہو چلی لہذا پابندیوں کو اطلاق لازمی ہو چلا ہے۔

ریاستی حکومت کی طرف سے اتوار کے روز جاری کئے گئے بیان کے مطابق وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے راجدھانی لکھنؤ میں انفیکشن کے معاملوں میں اضافہ کے پیش نظر پولیس کمشنر لکھنؤ کو ہدایت دی ہے کہ وہ یہ یقینی بنائیں کہ مذہبی مقامات پر پانچ سے زیادہ افراد داخل نہ ہونے پائیں۔ نیز بازاروں میں تارجوں سے گفت و شنید کے بعد ان کا تعاون طلب کرتے ہوئے سماجی دوری پر عمل درآمد کرائی جائے۔

واضح رہے کہ اتر پردیش میں کورونا کے معاملے تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ ہفتہ کے روز ریاست میں ایک دن میں 12787 نئے معاملوں کی تصدیق کی گئی، جبکہ 48 افراد فوت ہو گئے۔ ریاست میں بڑھتے مواملوں کے پش نظر پابندیوں کو بڑھایا جا رہا ہے۔ ہفتہ کے روز متعدد اضلاع میں نائٹ کرفیو نافذ کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 11 Apr 2021, 12:11 PM