فون کال کی شرح بڑھنے سے مہنگائی میں بھی ہوگا اضافہ: آر بی آئی گورنر

آر بی آئی گورنر شکتی کانت داس نے کہا کہ موبائل کال کی شرحوں میں اضافہ کا اثر مہنگائی پر بھی پڑے گا۔ انھوں نے کہا کہ فی الحال مہنگائی قابو میں ہے، لیکن جنوری سے مارچ کے درمیان اس میں تیزی آ سکتی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مستقبل قریب میں مہنگائی زیادہ ہونے کی فکر ظاہر کرتے ہوئے ریزرو بینک کے گورنر شکتی کانت داس نے جمعرات کو کہا کہ ٹیلی کام آپریٹروں کے ذریعہ حال میں ٹیرف بڑھانے کے اعلان سے ملک میں مہنگائی شرح بڑھے گی۔ انڈین ریزرو بینک (آر بی آئی) نے جمعرات کو حیرت انگیز طریقے سے ریپو ریٹ کو 5.15 فیصد پر بنائے رکھنے کا فیصلہ لیا۔ اس کے پیچھے اونچی شرح مہنگائی اور خوردنی مہنگائی کے آگے بڑھنے کے امکانات کا حوالہ دیا گیا۔

آر بی آئی کی مانیٹری پالیسی تجزیہ کے اعلان کے بعد میڈیا کے ساتھ بات چیت میں شکتی کانت داس نے کہا کہ ’’کور مہنگائی کے ضمن میں اس کے موجودہ زون میں اسی طرح بنے رہنے کی امید ہے، جو 4 فیصد سے نیچے ہے... لیکن کچھ اشاروں سے پتہ چلتا ہے کہ ٹیلی کام اور دیگر معاملوں سے جڑے کچھ فیصلے اس میں کردار نبھائیں گے اور ان کا مہنگائی پر اثر پڑ سکتا ہے۔ یہ امید ہے کہ مہنگائی اگلے سال کے دوسری سہ ماہی میں 3.8 فیصد ہو سکتی ہے۔‘‘


شکتی کانت داس نے کہا کہ ’’موجودہ وقت میں مہنگائی شرح زیادہ ہے، جو کہ خوردنی اشیاء کی مہنگائی کی وجہ سے ہے۔ ہمارا اندازہ بتاتا ہے کہ چوتھی سہ ماہی (جنوری-مارچ) میں فوڈ مہنگائی کی خصوصی طور سے بہت زیادہ رہنے کا امکان ہے او راس کا توازن آئندہ مہینوں میں کئی اسباب پر منحصر کرتا ہے۔‘‘

غور طلب ہے کہ سبھی تین نجی ٹیلی کام کمپنیوں ووڈافون-آئیڈیا، بھارتی ائیرٹیل اور جیو نے پری-پیڈ ٹیرف پلان کو بڑھا دیا ہے او راس میں 40 سے 50 فیصد کا اضافہ کیا گیا ہے۔ یہ اضافہ تین سال بعد کیا گیا اور سپریم کورٹ کے ذریعہ ایڈجسٹیڈ گراس ریونیو کے مدنظر سیکٹر کے مالی بحران سے گزرنے کے درمیان کیا گیا ہے۔ ووڈافون آئیڈیا اور ائیرٹیل کی ترمیم شدہ شرحیں منگل سے اثرانداز ہو گئیں اور جیو کی شرحیں جمعہ یعنی آج سے اثرانداز ہوں گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔