بنگال میں بی جے پی کی شکست سے متھن چکرورتی مشکل میں، پولیس کی پوچھ تاچھ شروع!

مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات ختم ہونے کے بعد بی جے پی لیڈر اور فلم اداکار متھن چکرورتی سے مغربی بنگال کی پولس نے انتخابی تشہیر کے دوران کی گئی ان کی متنازعہ تقریر کے تعلق سے پوچھ تاچھ شروع کر دی ہے

متھن چکرورتی، تصویر آئی اے این ایس
متھن چکرورتی، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

مشہور و معروف فلم اداکار متھن چکرورتی کو بی جے پی میں شامل ہوئے ابھی زیادہ دن نہیں ہوئے ہیں اور ان کے لیے پریشانیاں بڑھتی ہی جا رہی ہیں۔ مغربی بنگال اسمبلی انتخاب ختم ہونے کے بعد بی جے پی لیڈر متھن چکرورتی سے مغربی بنگال پولیس نے پوچھ تاچھ شروع کر دی ہے۔ رپورٹ کے مطابق متھن سے مغربی بنگال انتخابی تشہیر کے دوران ان کی تقریر کو لے کر پوچھ تاچھ کی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ بنگال انتخاب میں متھن چکرورتی پارٹی کے ’اسٹار کمپینر‘ تھے۔ بی جے پی میں شمولیت کے بعد متھن نے 7 مارچ کو ایک تقریر کی تھی جس کو لے کر ان کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اس پوچھ تاچھ سے بچنے کے لیے متھن چکرورتی نے عدالت میں عرضی بھی داخل کی تھی، لیکن انھیں پولیس کی پوچھ تاچھ میں تعاون کرنے کی ہدایت دی گئی۔


واضح رہے کہ متھن چکرورتی کے خلاف جو ایف آئی آر درج کی گئی ہے اس میں ان پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ متھن چکرورتی کی تقریر کی وجہ سے ہی مغربی بنگال الیکشن ختم ہونے کے بعد تشدد بھڑکا۔ اس معاملے میں متھن نے کہا کہ تقریر کے دوران انھوں نے صرف اپنی ہی فلموں کے ڈائیلاگ دہرائے تھے جس کا حقیقی معنوں میں کوئی خاص اہمیت نہیں تھی۔ دراصل متھن چکرورتی نے اپنی تقریر کے ایک حصے میں کہا تھا کہ ’’میں تمھیں ماروں گا یہاں اور تمھارا جسم قبرستان میں ملے گا۔‘‘ متھن چکرورتی کی انتخابی تقریر کے دوران لوگ خوب تالیاں بجاتے ہیں۔ وہ اپنی تقریر کے دوران یہ بھی کہتے ہیں کہ مجھے بغیر زہر والا سانپ سمجھنے کی بھول مت کرنا، میں اصلی کوبرا ہوں، جو آپ کو ڈستا ہے تو آپ فوٹو بن جاتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔