فوجی اہکار لوگوں کو پیٹتے ہیں پھر ’جے شری رام‘ کے نعرے لگانے پر مجبور کرتے ہیں: محبوبہ مفتی

محبوبہ مفتی نے ٹوئٹ میں کہا ہے کہ 'فوجی اہلکار نیم شب کو لوگوں کو گھروں سے گھسیٹ کر باہر نکالتے ہیں اور انہیں زدوکوب کرتے ہیں، پھر ان بے گناہ لوگوں کو ’جے شری رام‘ کے نعرے لگانے پر مجبور کرتے ہیں۔

محبوبہ مفتی، تصویر یو این آئی
محبوبہ مفتی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ حکومت ہند 'جے شری رام' کے نعرے لگوا کر جموں و کشمیر کو بھارت میں ضم کرنے کی پالیسی اپنا رہی ہے۔ انہوں نے یہ باتیں سری نگر کے مضافاتی علاقہ ایچ ایم ٹی میں ملی ٹنٹوں کے حملے جس میں سیکورٹی فورسز کے دو اہلکار جاں بحق ہوئے تھے، کے بعد فوج کے ہاتھوں لوگوں کی مبینہ مار پیٹ کے تناظر میں اپنے ایک ٹوئٹ میں کی ہیں۔

موصوفہ نے اپنی ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ 'فوجی اہلکار نیم شب کو لوگوں کو گھروں سے گھسیٹ کر باہر نکالتے ہیں اور انہیں زدوکوب کرتے ہیں، ان بے گناہ لوگوں کو جے شری رام کے نعرے لگانے پر مجبور کرتے ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ اب جموں و کشمیر کو بھارت میں ضم کرنے کے لئے ایسا کرنا حکومت ہند کا وژن ہے'۔

بتادیں کہ سری نگر کے مضافاتی علاقہ خوشی پورہ ایچ ایم ٹی میں 26 نومبر کو ہونے والے ملی ٹنٹوں کے حملے میں دو فوجی اہلکار ہلاک ہوئے تھے۔ بعض میڈیا رپورٹس کے مطابق حملے کے بعد سیکورٹی فورسز اہلکاروں نے جائے واردات کی متصل بستی کے لوگوں کو دوران شب گھروں سے باہر نکالا اور انہیں مبینہ طور پر زدوکوب کیا۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے انہیں اس سلسلے میں کوئی شکایت موصول نہیں ہوئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next