چین کے ساتھ بے معنی بات چیت سے قومی سلامتی کو خطرہ: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے پیر کو ٹوئٹ کیا کہ گوگرا ۔ہاٹ اسپاٹ اسپرنگ اور ڈیپسانگ پلینس پر چینی فوج کے قبضہ سے ہندوستانی کے اسٹریٹجک مفادات کے ساتھ ساتھ ڈی بی او ہوائی پٹی کو بھی براہ راست خطرہ لاحق ہے۔

راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
راہل گاندھی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے چینی فوجی دراندازی کے سلسلے میں فوجی سطح پر ہونے والی بات چیت کو بے معنی قرار دیتے ہوئے اسے وقت کا ضیاع قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے قومی سلامتی خطرے میں پڑ گئی ہے۔ راہل گاندھی نے پیر کو ٹوئٹ کیا ’’گوگرا ۔ہاٹ اسپاٹ اسپرنگ اور ڈیپسانگ پلینس پر چینی فوج کے قبضہ سے ہندوستانی کے اسٹریٹجک مفادات کے ساتھ ساتھ ڈی بی او ہوائی پٹی کو بھی براہ راست خطرہ لاحق ہے۔ حکومت کی بے مقصد بات چیت سے قومی سلامتی کو بڑے پیمانے پر خطرہ ہوا ہے۔ ہم اس سے بہتر کام کرنے کے اہل ہیں۔

کانگریس نے چینی سرحد پر امن سے متعلق فوج کے وعدہ خلافی کی خبروں پر حکومت پر تنقید کرتے ہوئے الزام لگایا کہ اس نے حکمت عملی کے ساتھ سرحد پر چین کے سامنے ہتھیار ڈال دیئے اور قومی سلامتی کے ساتھ سمجھوتہ کر رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق چینی فوج سرحد پر اسٹریٹجک اہمیت کے حامل کئی خطوں سے پیچھے نہیں ہٹ رہی ہے۔ اس سلسلے میں چین کی فوج اور ہندوستانی فوج کے مابین 9 اپریل کو ہوئے آخر دور کے مذاکرات کے دوران، چینی فوج نے اسٹریٹجک اہمیت کی حامل کئی چوکیوں سے پیچھے ہٹنے سے انکار کر دیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔