شہریت ترمیمی قانون پر مایاوتی کا مسلمانوں کو مشورہ

مایاوتی نے منگل کو ٹوئٹ کیا اور کہا کہ بی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ مرکزی حکومت سی اے اے یا این آرسی کو لے کر مسلمانوں کے تمام خدشات کو فوری طور پر دور کرے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

لکھنؤ: بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی نے شہریت ترمیمی قانون ( سی اے اے) کو لے کر مسلمانوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ کسی کے بہکاوے میں نہ آئیں اور مرکزی حکومت کو بھی نصیحت دی کہ قانون کو لے کر مسلمانوں کے ذہن میں اگر شک ہے تو اسے دور کرے۔ مایاوتی نے منگل کو ٹوئٹ کیا اور کہا کہ بی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ مرکزی حکومت سی اے اے یا این آرسی کو لے کر مسلمانوں کے تمام خدشات کو فوری طور پر دور کرے۔ اتنا ہی نہیں ان کوپورے طور سے مطمئن بھی کرے۔ اس کے ساتھ ہی ان کو ہر طرح سے ہوشیار بھی کرے۔

مایاوتی نے اس کے ساتھ ہی کہا کہ شہریت ترمیمی قانون پر مسلم سماج کے لوگ ہوشیار بھی رہیں۔ یہ بھی طے کر لیں کہ کہیں اس مسئلے کی آڑ میں ان کا سیاسی استحصال تو نہیں ہو رہا ہے اور وہ اس میں پسنے لگے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہریت ترمیمی بل 2019 کی منظوری کے بعد مسلم کمیونٹی میں پیدا ہونے والی کشیدگی اور خوف کو دور کرنے کے لئے یہ بہت ضروری ہے۔

بی ایس پی سربراہ اس سے پہلے سی اےاے احتجاج میں ہونے والے تشدد کے سلسلہ میں حکومت سے اعلی سطحی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کر چکی ہیں۔ انہوں نے پولیس اور ضلع اور صوبائی انتظامیہ کو بھی منصفانہ طور پر کام کرنے کی صلاح دی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ اگر کوئی معصوم پکڑا گیا ہے تو اسے جلد رہا کیا جائے۔

next