بنگال میں نامعلوم بخار سے کئی بچوں کی موت، ممتا بنرجی نے دی جانچ کی ہدایت

بچوں کی اموات پر سیاست کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے، اپوزیشن لیڈر اور گورنر نے اس معاملے میں حکومت کی تنقید کی ہے۔ شوبھندو ادھیکاری نے مرکزی حکومت کو خط بھی لکھا ہے۔

ممتا بنرجی، تصویر آئی اے این ایس
ممتا بنرجی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کلکتہ: مغربی بنگال میں نامعلوم بخار سے بچے متاثر ہو رہے ہیں اور اموات بھی ہو رہی ہے۔ کورونا وائرس جیسی علامت کے باوجود کورونا کی تصدیق نہیں ہو رہی ہے۔ ان حالات کے مد نظر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے ریاستی سکریٹری صحت نارائن سوروپ نگم کو اس معاملے کی جانچ کرنے کی ہدایت دی ہے۔

بچوں کی اموات پر سیاست کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔ اپوزیشن لیڈر اور گورنر نے اس معاملے میں حکومت کی تنقید کی ہے۔ شوبھندو ادھیکاری نے مرکزی حکومت کو خط بھی لکھا ہے۔ اسی کے تناظر میں ممتا بنرجی نے فوری جانچ کی ہدایت دی ہے۔ ایک ہی وقت میں اسکول آف ٹراپیکل میڈیسن اور شمالی بنگال میں گورنمنٹ لیب اس بخار کے وائرس کی جانچ کر رہی ہے، انہیں فوری رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ ریاستی محکمہ صحت پہلے ہی بخار کا علاج کرنے کے لیے ایس او پی تیار کر چکا ہے۔ اسے اسپتالوں میں بھیجا جائے گا۔


جمعہ کو مزید دو بچے کی مالدہ اسپتال میں موت ہوگئی ہے۔ اس سے مزید خدشات بڑھ گئے ہیں۔ گزشتہ 48 گھنٹوں میں مالدہ میں کل پانچ بچوں کی موت ہوئی ہے۔ آج کلکتہ سے صحت کے پانچ ماہرین کی ایک ٹیم شمالی بنگال کا دورہ کر رہی ہے۔ انہوں نے سلی گڑی ڈسٹرکٹ اسپتال، نارتھ بنگال میڈیکل کالج اور اسپتال کا دورہ کیا۔

ریاستی سکریٹری صحت نارائن سوروپ نگم نے کہا تھا کہ جانچ کے بعد اس بخار کی نوعیت معلوم ہوگئی ہے۔ یہ مجموعی طور پر موسمی بخار ہی ہے۔ اس بخار سے گھبرانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ زیادہ تر بچے انفلوئنزا بی اور آر ایس وائرس سے متاثر ہوتے ہیں۔ مرنے والوں کو دیگر جسمانی پریشانیوں کا سامنا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔