منی پور تشدد: چوراچاندپور سے ہتھیاروں کا ذخیرہ برآمد

مرکزی اور ریاستی سیکورٹی فورسز کی ایک مشترکہ ٹیم نے ہفتہ کو منی پور کے چورا چند پور ضلع کے کھوڈانگ گاؤں میں اسلحہ برآمد کیا، جس میں جدید ترین مارٹر، سنگل بیرل بندوق اور دیگر جنگی ساز و سامان شامل ہے

<div class="paragraphs"><p>آئی اے این ایس</p></div>

آئی اے این ایس

user

قومی آوازبیورو

امپھال: مرکزی اور ریاستی سیکورٹی فورسز کی ایک مشترکہ ٹیم نے ہفتہ کو منی پور کے چورا چند پور ضلع کے کھوڈانگ گاؤں میں 15 ہتھیار برآمد کیے، جن میں 14 جدید ترین مارٹر، ایک سنگل بیرل بندوق اور دیگر جنگی اسٹورز شامل ہیں۔

منی پور، ناگالینڈ اور جنوبی اروناچل پردیش کے دفاعی ترجمان لیفٹیننٹ کرنل امت شکلا نے بتایا کہ فوج، آسام رائفلز، دیگر مرکزی فورسز اور منی پور پولیس کی ایک مشترکہ ٹیم نے مخصوص خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے ضلع چورا چند پور کے گاؤں کھوڈانگ میں آپریشن شروع کیا اور اسلحہ و جنگی مواد برآمد کیا۔


تھوبل ضلع میں اسی طرح کی کارروائی میں، آسام رائفلز اور پولیس کی مشترکہ ٹیم نے کواروک مارنگ میں تلاشی آپریشن کیا اور ایک 9 ایم ایم کاربائن اور دیگر جنگی مواد برآمد کیا۔ برآمد شدہ اسلحہ اور گولہ بارود مزید تفتیش کے لیے پولیس کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ منی پور میں نسلی تشدد سب سے پہلے 3 مئی کو اس وقت شروع ہوا تھا جب میتئی برادری کو شیڈول ٹرائب (ایس ٹی) میں شامل کرنے کے کے خلاف پہاڑی اضلاع میں 'قبائلی یکجہتی مارچ' نکالا گیا تھا۔ تشدد میں اب تک 150 افراد اپنی جانیں گنوا چکے ہیں اور سینکڑوں زخمی ہو چکے ہیں۔ میتئی کمیونٹی منی پور کی آبادی کا تقریباً 53 فیصد ہے اور وہ زیادہ تر وادی امپھال میں رہتے ہیں۔ کوکی اور ناگا برادریوں کی آبادی 40 فیصد سے زیادہ ہے، یہ لوگ پہاڑی اضلاع میں رہتے ہیں۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


/* */