ممبئی اور مہاراشٹر کو فوج کے حوالے کیا جا سکتا ہے: نائب وزیر اعلی

مہاراشٹر کے نائب وزیر اعلی و وزیر مالیات اجیت پوار نے کہا ہے کہ اگر عوام کی سڑکوں پر آمدورفت میں فوری روک نہیں لگی تو حکومت پورے مہاراشٹر کو فوج کے حوالے کرنے کا جلد ہی فیصلہ لے سکتی ہے-

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ممبئی: خوفناک کورونا وائرس بیماری کے پیش نظر مہاراشٹر سمیت ملک بھر میں لاک ڈاون کے باوجود عروس البلاد ممبئی اور ریاست کے مختلف اضلاع میں عوام کی ایک اچھی خاصی تعداد کو سڑکوں پر گھومنا اور مجمع لگانے کو دیکھ کر آج یہاں مہاراشٹر کے نائب وزیر اعلی و وزیر مالیات اجیت پوار نے کہا ہے کہ اگر عوام کی سڑکوں پر آمدورفت میں فوری روک نہیں لگی تو حکومت پورے مہاراشٹر کو فوج کے حوالے کرنے کا جلد ہی فیصلہ لے سکتی ہے-

انہوں نے کہا کہ امریکہ میں لاک ڈاون کے درمیان مختلف خلاف ورزیوں کے خلاف امریکی حکومت نے بھی امریکی فوجیوں کا سہارا لیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ممبئی سمیت مہاراشٹرکی عوام حکومت کو مجبور نہ کرے کہ وہ مہاراشٹر کو فوج کے حوالے کر دے- نائب وزیر اعلی کا یہ بیان اس وقت جاری کیا گیا جب سوشل میڈیا پر ایک دودھ کی گاڑی کو لوٹتے اور وسئی نامی علاقہ میں ایک پولیس سپاہی کو موٹر سائیکل چلانے والے نوجوان کی جانب سے زدوکوب کیا جانے والا ویڈیو وائرل ہوا۔

اسی طرح سے مالیگاوں میں مجلس اتحادالمسلمین کے رکن اسمبلی مفتی محمد اسمائیل کے ہاتھوں مالیگاوں کے سرکاری اسپتال میں ڈاکٹروں کے خلاف نازیبا کلمات ادا کرنے اور انہیں دھمکانے کا معاملہ بھی سامنے آیا ہے۔ نائب وزیر اعلی نے آج یہاں اس ضمن میں اپنے کابینی وزراء اور اعلی افسران سے گفتگو کی اور کہا کہ لاک ڈاون اور کرفیو کے باوجود بھی عوام بڑے دھڑلے کے ساتھ روڈ پر گھوم رہیں ہیں اور ڈاکٹروں پر حملہ کیا جا رہا ہے جو ناقابل برداشت ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے خلاف لڑی جانے والی اس جنگ میں جو کوئی رخنہ اندازی کرے گا اس کے ساتھ سختی کے ساتھ کارروائی کی جائے گی اور سخت سزا دی جائے گی۔ اجیت پوار نے مزید کہا کہ ریاست میں دودھ، پھل، سبزی ترکاری، ادویات، اناج اور پیٹرول کا بھرپور اسٹاک موجود ہے لیکن اس کے باوجود بھی بازاروں میں عوام کی بھیڑ ایک تشویشناک امر ہے۔

انہوں نے کہا کہ سرکاری افسران کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ ضروری اجناس عوام الناس کو ان کے دروازے تک پہنچائیں یا رہائشی سوسائٹیوں کے گیٹ تک ضروری اشیاء مہیا کی جائیں۔ انہوں نے غیر سرکاری تنظیموں سماجی خادموں اور دیگر سے درخواست کی ہے کہ وہ بزرگ شہریوں اور خواتین کی ضرورتوں کا خاص خیال رکھتے ہوئے ان کی ہر ممکن مدد کریں۔