’گڈکری ہار جائیں گے‘، آڈیو وائرل ہونے پر دو بی جے پی رہنما 6 سال کے لئے معطل

دونوں رہنماؤں نے انتخابی نتائج آنے سے قبل موبائل پر ہوئی بات چیت میں گڈکری کی ہار کی پیش گوئی کرتے ہوئے کہا کہ وہ صرف امیروں کی سنتے ہیں اور پارٹی کے ایماندار کارکنان کو نظرانداز کرتے ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی ) نےمرکزی وزیر نتن گڈکری پر تبصرہ کرنے والے دو رہنماؤں کوسزا دیتے ہوئے انہیں پارٹی سے 6 سال کے لئے معطل کر دیا ہے۔ دونوں رہنما مہاراشٹر کے ناگپور سے تعلق رکھتے ہیں۔ ان دونوں رہنماؤں کی فون پر ہوئی بات چیت کی آڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔

ہندوستان ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق آڈیو میں جے ہری سنگھ ٹھاکر اور ابھے تِڑکے نے لوک سبھا انتخابات سے قبل پیش گوئی کرتے ہوئے کہا تھا کہ ناگپور سے کانگریس کے امیدوار نانا پٹولے انہیں ہرا دیں گے۔ اس کے بعد انہوں نے گڈکری کے خلاف نازیبا الفاظ کا بھی استعمال کیا۔ حالانکہ انتخابی نتائج کے مطابق گڈکری نے 197000 ووٹوں سے کانگریس امیدوار کو ہرا دیا۔

واضح رہے کہ ہری سنگھ ٹھاکر نے ناگپور سٹی یونٹ کے نائب صدر تھے اور تِڑکے مجلس عاملہ کےرکن تھے۔ معاملہ پر بی جے پی ناگپور یونٹ کے سربراہ سودھاکر کوہلے نے کہا کہ ’’دونوں رہنماؤں نے انتخابی نتائج آنے پہلے موبائل پر ہوئی بات چیت میں گڈکری کی ہار کی پیش گوئی کرتے ہوئے کہا کہ وہ صرف امیروں کی سنتے ہیں اور پارٹی کے ایماندار کارکنان کو نظر انداز کرتے ہیں۔‘‘

کوہلے نے مزید کہا کہ ’’پارٹی اس طرح کی بے ادبی کو برداشت نہیں کرے گی۔ میں نے میں نے ٹھاکر کو فوری عہدے سے ہٹانے کے لئے ناگپور ضلع کے سکریٹری باونکولے کو خط لکھا ہے۔ انہوں نے مجھ سے ٹھاکر کے عہدے پر دوسرے رہنما کو مقرر کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔‘‘

مہاراشٹر میں اسمبلی انتخابات سے قبل پارٹی سے نکالے جانے کے بعد ٹھاکر کی طبیعت بگڑ گئی اور انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔ وہیں اس معاملہ پر ٹھاکر نے کہا کہ آڈیو سے چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔ ہم گڈکری اور پارٹی کے دیگر رہنماؤں کی بہت عزت کرتے ہیں۔‘‘

next