چھ سال سے بقایہ تھا بجلی بل، کارروائی کے خوف سے شیوراج نے ادا کیے 1.22 لاکھ

ایم پی کے سابق وزیر اعلیٰ چوہان نے کرایہ کے مکان کا پچھلے 6 سالوں سے بجلی بل جمع نہیں کرایا تھا۔ اس بل کی رقم 1 لاکھ 22 ہزار روپے ہو گئی تھی۔ محکمہ کے ذریعہ نوٹس بھیجے جانے پر بل کی ادائیگی ہوئی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ شیو راج سنگھ چوہان نے 6 سالوں سے ودیشا میں اپنے کرایہ کے گھر کا بجلی بل جمع نہیں کیا تھا۔ اس سلسلے میں بجلی محکمہ نے جب نوٹس بھیجا تو شیو راج کو ہوش آیا۔ نوٹس میں 1.22 لاکھ روپے بل بقایہ ہونے کا تذکرہ کیا گیا۔ پیر کےر وز کانگریس رکن اسمبلی ششانک بھارگو نے میڈیا کے سامنے اس معاملے کو اجاگر کیا تھا اور اس کے بعد آناً فاناً میں شیوراج نے بجلی بل کی رقم جمع کرائی۔

دراصل سال 1995 میں شیو راج سنگھ چوہان نے منیا بھیا جین سے ودیشا میں مکان کرایہ پر لیا تھا۔ اس دوران شیوراج سنگھ چوہان رکن پارلیمنٹ تھے۔ اس وقت سے لگاتار یہ مکان ان کے ہی پاس ہے۔ اس مکان کا بل لیلا بائی کے نام سے آتا ہے اور اسی نام سے بجلی کمپنی نے نوٹس بھی جاری کیا ہے۔

بجلی کمپنی کی جانب سے نوٹس میں کہا گیا تھا کہ بجلی بل کی 1 لاکھ 22 ہزار 833 روپے بقایہ ہے۔ اس نوٹس سے پہلے بھی اطلاع دی گئی تھی، لیکن اس کے باوجود آپ نے بجلی بل کی پوری ادائیگی نہیں کی۔ اس بار بجلی بل ادا کرنے کا آخری موقع دیا جا رہا ہے اور 7 دنوں کے اندر بقایہ بجلی بل کی رقم کو جمع نہیں کیا گیا تو بغیر اطلاع دیئے آپ سے متعلق سبھی طرح کے بجلی کنکشن کو کاٹ دیا جائے گا۔ ساتھ ہی بقایہ رقم کی وصولی کی جائے گی۔

اس معاملے میں گھر کے مالک منا بھیا جین نے کہا کہ ہم نے 1995 میں شیوراج سنگھ چوہان کو مکان کرایہ پر دیا تھا، اس وقت سے ہی گھر کا استعمال شیوراج کر رہے ہیں۔ منا بھیا جین نے بجلی کنکشن کے تعلق سے کہا کہ کنکشن کس کے نام سے ہے، لیلا بائی کون ہے، اس کی جانکاری ہمیں نہیں ہے۔