للت پور کسان خودکشی معاملہ: پولیس نے کہا کھاد کی نہیں تھی قلت

للت پور کے صدر کوتوالی کے تحٹ گرام مسورا کھرد باشندہ رگھویر ولد پرتھوی پت پٹیل (37) نے اپنے کھیت پر جامن کے ایک درخت سے پھانسی لگا کر خودکشی کرلی تھی۔

خودکشی، تصویر آئی اے این ایس
خودکشی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

للت پور: اترپردیش کے ضلع بندیل کھنڈ میں ہفتہ کو کھاد کی کمی کی وجہ سے ایک کسان کی مبینہ خودکشی کے معاملے کی ابتدائی جانچ کے بعد پولیس نے معاشی تنگی کی وجہ سے قرض کے بوجھ کو خودکشی کے شبہ کا اظہار کیا ہے۔ حالانکہ متوفی کسان کے اہل خانہ معاشی تنگی کے ساتھ کھاد کی کمی کو بھی اس خودکشی کی وجہ بتا رہے ہیں۔

للت پور کے صدر کوتوالی کے تحٹ گرام مسورا کھرد باشندہ رگھویر ولد پرتھوی پت پٹیل (37) نے اپنے کھیت پر جامن کے ایک درخت سے پھانسی لگا کر خودکشی کرلی تھی۔ پولیس کو متوفی کی لاش کے قریب سے ایک سوسائڈ نوٹ ملا تھا جس میں خودکشی کی وجہ کھاد نہ ملنے کو بتایا گیا ہے۔


اس ضمن میں کوتوالی صدر کے انچارج انسپکٹر ونود مشرا نے واقعہ کی ابتدائی جانچ کی بنیاد پر بتایا کہ متوفی کے پاس سے برآمد سوسائڈ نوٹ میں کھاد نہ ملنے کی بات لکھی پائی گئی ہے۔ جبکہ گاؤں میں واقع کھاد کی دوکان میں کھاد دستیاب تھی اور معاملے کے دن کوئی خریدنے بھی نہیں آیا۔

مشرا نے کہا کہ متوفی کے اوپر زیادہ قرض بھی تھا۔ جانچ میں پتا چل ہے کہ متوفی کے نام پر کل 3.889 ہیکٹر زمین ہے۔ متوفی کے ذریعہ سابق میں تقریبا 60 فیصدی زرعی زمین پر بوائی کی جاچکی تھی۔ جانچ میں یہ بھی پتہ چلا ہے کہ گاؤں میں ہی کھاد کی دوکان ہے۔ دوکان کے ریکارڈ سے پتہ چلا ہے کہ دوکان میں 700 بوری کھاد دستیاب تھی۔ ہفتہ کو پیش آئے معاملے کے دن بھی دوکان میں چھ بوری کھاد تھی، جس کو لینے والا کوئی نہیں تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔