کسان تحریک کا خوف! ’زرعی قوانین کے حق میں تقریب سے بچیں‘ امت شاہ کی ہریانہ حکومت کو صلاح

ہریانہ کے وزیر تعلیم کنور پال گوجر نے بدھ کے روز صحافیوں کو بتایا کہ مرکزی وزیر داخلہ نے کہا کہ اگلی اطلاع موصول ہونے تک تقریبات کو روک دیا جائے

امت شاہ، تصویر آئی اے این ایس
امت شاہ، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

چنڈی گڑھ: وزیر داخلہ امت شاہ نے ہریانہ حکومت کو صلاح دی ہے کہ وہ زرعی قوانین کی حمایت میں تقریبات کے انعقاد سے اجتناب کریں۔ ہریانہ کے وزیر تعلیم کنور پال گوجر نے بدھ کے روز صحافیوں کو بتایا کہ وزیر تعلیم کنور پال گوجر نے بدھ کے روز صحافیوں کو بتایا کہ وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ اگلی اطلاع موصول ہونے تک تقریبات کو روک دیا جائے۔

امت شاہ کی طرف سے یہ صلاح کرنال کے نزیدک ایک گاؤں میں پیش آنے والے اس واقعہ کے بعد دی گئی ہے، جس میں وزیر اعظم منوہر لال کھٹر نے مخالفت کا سامنا کرنے کے بعد مجبوراً میٹنگ کو منسوخ کر دیا تھا۔

گوجر نے کہا، ’’کرنال میں جو کچھ ہوا، اس کےک بعد وزیر داخلہ نے حکومت کو صلاح دی ہے کہ وہ کسانون کے ساتھ ٹکراؤ نہ بڑھائیں۔‘‘ ساتھ ہی ہریانہ حکومت کے وزیر نے کسانوں پر بھی نشانہ لگایا اور کہا کہ پوری ریاست نے دیکھا کہ اتوار کے روز کسانوں نے اس وقت کیسا سلوک کیا جب وزیر اعلیٰ منوہر لال کھٹر مجمع سے خطاب کرنے والے تھے۔

موبائل فون کی فوٹیج میں مظاہرین کو ہنگامہ کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ کسانوں نے پوسٹر اور بینر پھاڑ ڈالے اور کرسیاں بھی پھینک دی تھیں۔ وزیر اعلیٰ کو ہیلی کاپٹر سے بغیر اترے واپس چلے جانے پر مجبور ہونا پڑا تھا۔

وزیر اعلیٰ نے بعد میں میڈیا سے کہا تھا کہ تقریباً 5 ہزار لوگ میرے آنے اور بولنے کا انتظار کر رہے تھے لیکن ایسا نہیں ہو پایا۔ احتجاج کے پیش نظر میں نے ہیلی کاپٹر کو لوٹنے کو کہا کیوں میں نظم و نسق کی صورت حال کو خراب کرنا نہیں چاہتا تھا۔ اس واقعہ کے لئے حزب اختلاف کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ کسان کبھی بھی اس طرح کا سلوک نہیں کرتے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next