کیشو پرساد کو اپنے حلقہ میں سخت مخالفت کا سامنا، خواتین نے کی جم کر نعرے بازی، ویڈیو وائرل

اتر پردیش کے نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کوشامبی کی سیراتھو اسمبلی سیٹ سے الیکشن لڑ رہے ہیں، جہاں خواتین نے ان کی شدید مخالفت کی اور انہیں وہاں سے لوٹنا پڑا

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: اتر پردیش کے نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ سریتھو کی اسمبلی سیٹ سے امیدوار بنائے گئے ہیں اور وہ ہفتہ کے روز یہاں کے غلامی پور گاؤں میں پہنچے، جہاں خواتین نے ان کی شدید مخالفت کی۔ صرف اتنا ہی نہیں خواتین نے ان کے سامنے دروازہ تک بند کر دیا۔ اس پورے واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر تیزی سے وائرل ہو رہی ہے۔

وائرل ہونے والی ویڈیو میں خواتین کیشو پرساد موریہ کے خلاف نعرے بازی کرتی ہوئی نظر آ رہی ہیں۔ ویڈیو میں ’کیشو موریہ چور ہے‘ جیسے نعرے لگ رہے ہیں۔ دریں اثنا، کیشو پرساد موریہ لوگوں کو خاموش رہنے کا اشارہ بھی کرتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ ویڈیو وائرل ہوتے ہی لوگوں نے اپنا ردعمل دینا شروع کر دیا ہے جبکہ بی جے پی نے اسے حزب اختلاف کی غلط تشہیر قرار دیا ہے۔


سابق آئی اے ایس افسر سوریہ پرتاپ سنگھ نے ویڈیو شیئر کرتے ہوئے یوپی حکومت پر طنز کرتے ہوئے لکھا ’’اپنے ہی اسمبلی حلقہ انتخاب سیراتھو میں کیشو موریہ کا استقبال کچھ اس طرح کیا گیا۔ جب ڈپٹی سی ایم کی مقبولیت کا یہ حال ہے تو ارکان اسمبلی کا کیا حال ہوگا؟ کسی بھی حکومت کے خلاف عوام کا ایسا غصہ اتر پردیش میں دہائیوں بعد دیکھنے کو مل رہا ہے۔‘‘

سماج وادی پارٹی نے بھی اس ویڈیو پر رد عمل ظاہر کیا ہے۔ پارٹی کے ٹوئٹر ہینڈل سے لکھا گیا، ’’سیراتھو میں غنڈے بدمعاش دوڑائے جا رہے ہیں، عوام سراپا احتجاج ہے، عوام نعرےبازی کر رہی ہے، اگر سیکیورٹی نہ ہو تو عوام کٹائی بھی نہ کر دے۔‘‘

ساتھ ہی راگھویندر سنگھ بھدوریا نامی صارف نے لکھا، ’’یوپی کے لوگوں کو سمجھنا مشکل ہے، یہ الیکشن بہت دلچسپ ہو گیا ہے‘‘۔ پردیپ نامی صارف نے ٹویٹ کیا، ’’اگر پانچ سال کام کرتے تو خاموش کرانے کا اشارہ نہ کرنا پڑتا اسٹول منسٹر جی!‘‘


میڈیا رپورٹ کے مطابق جس اسمبلی حلقہ سے کیشو موریہ انتخاب لڑ رہے ہیں وہاں کی پردھان کے شوہر راجیو موریہ پچھلے تین دنوں سے غائب ہیں۔ موریہ اسی شخص کے رشتہ داروں سے ملنے ملاقات کے لئے یہاں پہنچے تھے۔ جب وہاں موجود خواتین نے انہیں دیکھا تو دروازے بند کر دیے۔ سیکورٹی اہلکاروں کی کوششوں کے بعد موریہ لاپتہ کے گھر تک پہنچ سکے۔ موریہ نے اس شخص کے اہل خانہ سے ملاقات کی اور انہیں فوری کارروائی کی یقین دہانی کرائی۔

خود کیشو پرساد موریہ نے بھی اپنے حلقہ انتخاب کے دورے کی کئی تصاویر اور معلومات ٹوئٹ کی ہیں تاہم وائرل ویڈیو اور اس میں اپنے خلاف احتجاج پر انہوں نے کچھ نہیں کہا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔