کیرالہ: وزیر اعلیٰ وجین نے نشہ اور لو جہاد کے بیان کو مسترد کر دیا

کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پنارائی وجین نے بشپ جوزف کلارنگت کے "نشہ اور لو جہاد" کے ریمارکس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے بیانات کسی بھی صورت میں نہیں دیئے جانے چاہئیں

کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پنارائی وجین / Getty Images
کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پنارائی وجین / Getty Images
user

یو این آئی

ترواننت پورم: کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پنارائی وجین نے بشپ جوزف کلارنگت کے نشہ جہاد (نارکوٹکس جہاد) اور لو جہاد کے ریمارکس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کے بیانات کسی بھی صورت میں نہیں دیئے جانے چاہئیں۔ وجین نے بدھ کے روز بشپ کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کیرالہ سیکولرازم کا مضبوط میدان ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشرہ ان لوگوں کے خلاف سخت موقف اختیار کرے گا جو اس میں خلل ڈالنے کی کوشش کریں گے۔

وجین کا بیان اپوزیشن کی جانب سے بار بار تنقید کے تناظر میں آیا ہے۔ ایک پریس کانفرنس میں اس معاملے پر بشپ کے پہلے بیانات کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے اسے ایک بدقسمت دن قرار دیا ہے۔ میں نے کہا ہے کہ ایسا بیان کسی ایسے شخص کو نہیں دینا چاہیے جو اس اعلیٰ عہدے پر فائز ہو۔


انہوں نے کہا ، "بہت سارے لوگ اس کی حمایت میں نہیں ہیں۔ یہ کیرالہ ہے ، سیکولرازم کا مضبوط میدان۔ کسی کو یہ نہیں سوچنا چاہیے کہ یہ رکاوٹ بن سکتا ہے۔ جو بھی ایسے اقدامات کرے گا ، معاشرہ اس کے خلاف سخت موقف اختیار کرے گا۔ وزیراعلیٰ نے بشپ کے 'لو جہاد' بیان پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت نے پارلیمنٹ کو بتایا ہے کہ ملک میں ایسا کچھ نہیں ہو رہا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ سائرو مالابار چرچ سے تعلق رکھنے والے بشپ جوزف کلارنگاٹ نے 9 ستمبر کو کہا تھا کہ کیرالہ میں عیسائی لڑکیاں "لو نشہ جہاد" کا شکار ہو رہی ہیں اور دوسرے مذاہب کے نوجوان کو تباہ کرنے کے لئے بنیاد پرست ایسے استعمال کر رہے ہیں۔ مسلم تنظیموں نے بشپ کے بیان کی شدید مخالفت کرتے ہوئے ان سے بیان واپس لینے کی اپیل کی ، لیکن بشپ اپنے بیان پر قائم رہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔