کیجریوال حکومت کا نادرشاہی فیصلہ، بنگلہ صاحب کو بند کرنے کا حکم واپس لیں اور معافی مانگیں: بی بی جاگیر کور

بی بی جاگیر کور نے کہا کہ گرودوارہ انسانیت کا روحانی مرکز ہے اور یہاں سے انسانی فلاح و بہبود کے لیے خدمات فراہم کی جاتی ہیں۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

دہلی حکومت کے گرودوارہ بنگلہ صاحب کو بند کرنے کے فیصلے کو نادر شاہی فیصلہ قرار دیتے ہوئے شرومنی گوردوارہ پربندھک کمیٹی کی چیئرپرسن بی بی جاگیر کور نے دہلی حکومت سے اپنے فیصلہ کو واپس لینے اور معافی مانگنے کے لئے کہا ہے ۔

بی بی جاگیر کور نے کہا کہ گرودوارہ انسانیت کا روحانی مرکز ہے اور یہاں سے انسانی فلاح و بہبود کے لیے خدمات فراہم کی جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کی آڑ میں گرودوارہ شری بنگلہ صاحب کو بند کرنے کا حکم دہلی حکومت کا آمرانہ رویہ ظاہر کرتا ہے۔ انہوں نے دہلی حکومت کے اس فیصلہ کو غیر آئینی قرار دیا ۔ بی بی جاگیر کور نے کہا کہ یہ ہی گرودوارہ تھا جہاں کورونا کی وبا کے دوران مریضوں کو سب سے زیادہ راحت پہنچائی گئی۔انہوں نے کہا کہ یہاں کورونا کے متاثرین کو علاج اور کھانا دونوں فراہم کرایا گیا ۔


واضح رہے ایس ڈی ایم نے گرودوارہ بنگلہ صاحب کے گرو گھر کو بند کرنے کے لئے نوٹس جاری کیا ہے۔ اس دوران دہلی گرودوارہ مینجمنٹ کمیٹی کے صدر منجندر سنگھ سرسا نے اس نوٹس کی سختی سے تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ نوٹس غیر منتقی اور نادر شاہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس نوٹس کو فورا واپس لینا چاہئے ۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔