ویڈیو: کٹھوعہ معاملہ کے وکلاء سے خاص بات چیت

طالب حسین اور دیپیکا سنگھ راجاوت

کٹھوعہ اجتماعی عصمت دری اور قتل معاملہ کے وکلاء دیپیکا سنگھ راجاوت اور طالب حسین نے ’قومی آواز‘ سے گفتگو میں بتایا کہ 8 سالہ معصوم بچی کے مقدمہ کی پیروی کرنے کی وجہ سے انہیں دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔

جموں رہائشی ایڈوکیٹ دیپیکا سنگھ راجاوت کو اس بات پر سخت غم وغصہ ہے کہ انہیں کٹھوعہ کی 8 سالہ معصوم بچی کا مقدمہ اپنے ہاتھ میں لینے کی وجہ سے ان کے خلاف زہر اگلا جا رہا ہے اور انہیں دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔ انہیں کی عرضی پر سماعت کے بعد ہائی کورٹ نے تفتیش کے لئے ایس آئی ٹی تشکیل دینے کا حکم دیا تھا اورآج 8 ملزمان سلاخوں کے پیچھے پہنچ سکے۔

طالب حسین حسین بھی ایڈوکیٹ ہیں اور کٹھوعہ عصمت دری اور قتل کے معاملہ کی پیروی کر رہے ہیں۔ انہوں نے جنوری میں سی بی آئی تفتیش کا مطابلہ کیا تھا لیکن اس وقت ان کا ساتھ کسی نے نہیں دیا۔ ان کو بھی دیپیکا سنگھ کی طرح ہی غم وغصہ ہے، یہ کہتے ہیں کہ ایک طرف تو بی جے پی ہندوستان کے ہر قانون کو جموں و کشمیر میں نافذ کرانا چاہتی ہے اور دوسری طرف جنگلات کے حقوق کے قانون کی مخالفت کرتی ہے۔

سب سے زیادہ مقبول