کشمیر: موسم مسلسل خوشگوار تاہم شبانہ درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے

رات کے دوران لوگوں کو سردی سے پریشان ہونا پڑا، ادھر محکمہ موسمیات نے وادی میں اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران موسم مجموعی طور پر خشک رہنے کی پیش گوئی کی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

سری نگر: وادی کشمیر میں موسم خشک ہی نہیں بلکہ مسلسل خوشگوار بھی ہے تاہم شبانہ درجہ حرارت ایک بار پھر نقطہ انجماد سے نیچے درج ہوا ہے جس کے باعث رات کے دوران لوگوں کو سردی سے پریشان ہونا پڑا۔ ادھر محکمہ موسمیات نے وادی میں اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران موسم مجموعی طور پر خشک رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔

وادی کا بیرون دنیا کے ساتھ زمینی و فضائی رابطہ برا بر برقرار و بحال ہے۔ ہائی وے ذرائع کے مطابق وادی کو ملک کے دوسرے حصوں کے ساتھ جوڑنے والی سری نگر۔ جموں قومی شاہراہ پر منگل کے روز بھی یک طرفہ ٹریفک کی نقل و حمل جاری رہی اور گاڑیوں کو سری نگر سے جموں روانہ ہونے کی اجازت تھی۔

بتادیں کہ شاہراہ پر منگل کو قریب ایک گھنٹے تک ٹریفک کی نقل وحمل اُس وقت روک دی گئی تھی جب بانہال میں ایک مشکوک بوکس پایا گیا تھا۔ وادی میں 20 روزہ چلہ خورد کے آخری ایام کے دوران منگل کے روز بھی موسم خشک اور خوشگوار رہا۔ دن میں دھوپ کھلی رہی اور لوگوں نے اس سے لطف اندوز ہونے کے لئے کسی موقع کو ہاتھ سے نہیں جانے دیا۔

لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ چلہ خورد بھی اپنے تیکھے تیور دکھا سکتا ہے لیکن امسال یہ خاموش ہی رہا تاہم چلہ کلان نے اپنے طاقت کا بھر پور مظاہرہ کرکے لوگوں میں پرانے زمانے کے سیال کی یادیں تازہ کیں۔ محکمہ موسمیات ایک ترجمان کے مطابق سری نگر میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 1.4 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جبکہ وادی کے مشہور آفاق صحت افزا مقامات پہلگام اور گلمرگ میں کم سے کم درجہ حرارت بالترتیب منفی 5.8 ڈگری سینٹی گریڈ اور منفی 4.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا ہے۔

وادی کے سرحدی ضلع کپواڑہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 3.0 ڈگری سینٹی گریڈ جبکہ قاضی گنڈ اور کوکرناگ میں کم سے کم درجہ حرارت بالترتیب منفی 0.9 ڈگری سینٹی گریڈ اور 1.1 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا ہے۔ لداخ یونین ٹریٹری کے ضلع کرگل اور لیہہ میں کم سے کم درجہ حرارت بالترتیب منفی 13.4 ڈگری سینٹی گریڈ اور منفی 11.1 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔