کانپور میں 8 پولیس اہلکار کو شہید کرنے والا خطرناک مجرم وکاس دوبے کون ہے؟

کانپور میں وکاس دوبے کو گرفتار کرنے گئی پولیس ٹیم پر فائرنگ کی گئی جس کے نتیجہ میں 8 پولیس اہلکار شہید ہو گئے، اس واقعہ سے یوگی حکومت پر سوال اٹھ رہے ہیں، آئیے جانتے ہیں کہ یہ وکاس دوبے آخر کون ہے؟

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کانپور: یوگی کے راج میں جرائم عروج پر ہیں اور آئے دن قتل، لوٹ اور عصمت دری کی واردات رونما ہو رہی ہیں۔ وہیں، کانپور میں دیر رات گئے بدنامہ زنانہ مجرم وکاس دوبے کو گرفتار کرنے گئی پولیس ٹیم پر اندھادند فائرنگ کر کے سی او سمیت 8 پولیس اہلکاروں کو شہید کر دیا گیا۔ اس واقعہ نے یوگی حکومت پر کئی سوال کھڑے کیے ہیں اور حزب اختلاف کی طرف سے پوچھا جا رہا ہے کہ اگر اتر پردیش میں پولیس ہی محفوظ نہیں ہے تو عام آدمی کا کیا حال ہوگا یہ سمجھا جا سکتا ہے!

دریں اثنا لوگوں میں یہ تجسس بھی پایا جا رہا ہے کہ یہ وکاس دوبے آخر ہے کون جس نے اتنی بڑی وارات کو انجام دے دیا، جس کے حوالہ سے کہا جا رہا ہے کہ یہ یوپی پولیس کے ساتھ ہونے والا اپنی نوعیت کا پہلا حملہ ہے۔

وکاس دوبے کون ہے؟

بدنامہ زمانہ مجرم وکاس دوبے بیٹھور کلے شیولی تھانہ علاقہ کے بیکرو گاؤں کا رہنے والا ہے۔ اس نے اپنے گھر کو قلع نما بنایا ہوا تھا۔ ہسٹری شیٹر وکاس دوبے سال 2001 میں ہونے والے درجہ حاصل وزیر سنتوش شکلا کے قتل کا اہم ملزم ہے۔ سنتوش شکلا 2001 کی راج ناتھ سنگھ حکومت میں وزیر تھے اور ان کا قتل گھر میں گھس کر کیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں سال 2000 میں کانپور کے شیولی تھانہ علاقہ میں واقعہ تاراچند انٹر کالج کے اسسٹنٹ منیجر سدھیشور پانڈے کے قتل میں بھی وکاس دوبے کا ہاتھ بتایا جاتا ہے۔ شیولی تھانہ علاقہ میں ہی سال 2000 میں ہونے والے رام بابو قتل معاملہ میں بھی وکاس ملوث تھا اور الزام ہے کہ اس نے جیل میں رہتے ہوئے اس قتل کی سازش رچی تھی۔

ہسٹری شیٹر وکاس دوبے اس کے علاوہ سال 2004 میں کیبل کاروباری دنیش دوبے کے قتل معاملہ میں بھی ملزم ہے۔ اطلاعات کے مطابق بدنامہ زمانہ ہسٹری شیٹر وکاس دوبے کےک خلاف 60 مقدمات درج ہیں۔

    Published: 3 Jul 2020, 8:40 PM
    next