جنتادل یو، ایل جے پی اور جن ادھیکار پارٹی کے کئی لیڈر کانگریس میں شامل

مرکز اور بہار حکومت کی پالیسیوں سے عام لوگوں سے لیکر خودان کی پارٹی کے لیڈر بری طرح پریشان ہیں اور لوگ متبادل تلاش کررہے ہیں۔

فائل تصویر یو این آئی
فائل تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

بہار کی حکمراں جماعت جنتا دل یونائیٹڈ کو اس وقت شدید جھٹکا لگا جب پارٹی کے سابق ریاستی کونسل کے رکن کانگریس میں شامل ہو گئے۔ بہار میں حکمراں جنتادل یونائیٹڈ(جے ڈی یو) کے ساتھ ہی لوک جن شکتی پارٹی(ایل جے پی) اور جن ادھیکار پارٹی (جے اے پی) کے کئی لیڈر کل کانگریس میں شامل ہوگئے۔

ریاستی کانگریس ہیڈکوارٹر صداقت آشرم میں پارٹی کے صدر ڈاکٹر مدن موہن جھا کی موجودگی میں اتوار کو جنتادل یو کے سابق ریاستی کونسل کے رکن امت جھا، جے اے پی کے سابق ریاستی سکریٹری رانا امت سنگھ، سابق ضلعی جنرل سکریٹری وجے جھا، اویناش، اروندرجک، ایل جے پی کے لیڈر گورو جھا، بابی کمار اور بی کے جھا نے کانگریس کی رکنیت لی۔

اس موقع پر کانگریس کے ریاستی صدر ڈاکٹر جھا نے کہاکہ ان لیڈروں کے کانگریس میں شامل ہونےسے پارٹی مضبوط ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ مرکز اور بہار حکومت کی پالیسیوں سے عام لوگوں سے لیکر خودان کی پارٹی کے لیڈر بری طرح پریشان ہیں۔ لوگ متبادل تلاش کررہے ہیں۔ ان کے لئے کانگریس کے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں۔

سیاسی مبصرین کا ماننا ہے کہ کسان تحریک کی وجہ سےلوگوں میں حکمراں جماعت اور ان جماعتوں کےخلاف ناراضگی بڑھ رہی ہےجو کسانوں کےساتھ نہیں کھڑی ہیں ۔ احتجاج کرنے والے کسانوں کی حمایت میں کھڑے ہونے کی وجہ سے کانگریس کی مقبولیت میں اضافہ ہو رہا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔