دہلی فساد: جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے ’گوکل پوری ٹائر مارکیٹ‘ کی دکانوں کا تعمیری کام مکمل

اب یہ مارکیٹ جمعیت ٹائر مارکیٹ مدنی نگر گوکل پوری کے نام سے جانی جائیگی

تصویر محمد تسلیم
تصویر محمد تسلیم
user

محمد تسلیم

نئی دہلی: دہلی کے شمال مشرقی علاقے میں امسال فروری ماہ میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات میں گوکل پوری ٹائر مارکیٹ کی دکانوں کو لوٹنے کے ساتھ ساتھ دکانوں کو منہدم کرکے پوری مارکیٹ کو فسادیوں نے نذرِ آتش کر دیا تھا۔ جس سے دکانداروں کو بھاری مالی نقصان ہواہے۔ تاہم کورونا بحران کا سامنا کرتے ہوئے انکو دوہری مار جھیلنی پڑی ہے۔ جمعیت علماء ہند کی جانب سے گزشتہ ماہ سے مارکیٹ کی جن دکانوں کو نقصان پہنچایا گیا تھا ان کی تعمیر کا کام چل رہا تھا۔جو آج مکمل ہو گیا ہے۔ اس موقع پر جمعیت علماء ہند نے مارکیٹ کا افتتاح کیا۔جس میں ضلع مجسٹریٹ ششی کوشل،اے ڈی ایم آرسی اگروال، ایس ڈی ایم،دیویندر کمار نے بھی شرکت کر مارکیٹ کا دورہ کیا۔اور شجر کاری بھی کی۔

اس دوران جمعیتہ علماء ہند کے جنرل سیکرٹری مولانا محمود مدنی نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ خطاب کیا اور کہا کہ گزشتہ دنوں علاقہ میں فسادات ہوئے،شرپنسدوں اور ظلم کے شریک لوگوں نے معصوم افراد کے ساتھ زیادتیاں کیں ان کے مکانات دوکانات کو تباہ کیا اور گوکل پوری کی ٹائر مارکیٹ کو نہ صرف لوٹا گیا بلکہ نذرِ آتش بھی کیا گیا،ملک کے کچھ صاحب حیثیت مسلمانوں نے اس کی بحالی کا ذمہ اٹھایا جو کسی وجہ سے روک گیا، اللہ کا فضل ہے کہ اس نے بچے ہوئے کام مکمل کو کرانے کے لئے جمعیتہ علماء ہند کو توفیق دی جو ہمارے لئے خوشبختی اور سعادت کی بات ہے، جمعیتہ کے اہم ذمہ داران گوکل پوری ٹائر مارکیٹ کی بحالی میں مصروف رہے جو مکمل ہوگئ ہے۔انہوں نے سبھی دکانداروں کو مبارکباد پیش کی اور مستقل کے لیے اپنی نیک دعاؤں سے نوازا۔

دہلی فساد: جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے ’گوکل پوری ٹائر مارکیٹ‘ کی دکانوں کا تعمیری کام مکمل

ٹائر مارکیٹ میں موجود نیاز فاروقی نے نمائندہ کو بتایا کہ ٹائر مارکیٹ میں کل 224 دکان ہیں۔ان میں سے 97 دکانوں کی دیواروں،چھتوں کو گرا کر خاک کر دیا گیا تھا۔انہوں بتایا دکانوں کی تعمیر کے لیے کافی آرگنائزیشن نے شروعات میں تعمیر کا کام کیا تھا لیکن وہ پایہ تکمیل تک نہیں پہنچ پایا۔جس کے سبب لوگوں اور دکانداروں کو بھاری مالی نقصان کے ساتھ کافی پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔انہوں مزید کہا کہ سب سے پہلے مارکیٹ کی جو بدترین حالت ہو گئی تھی اس کو نارمل کرنا تھا۔اس کے لیے ہم نے یہاں کے انتظامیہ،پولیس ڈی ایم،وغیرہ سے بات کی اور ان کا تعاون بھی ہمیں مل پایا۔ انہوں نے کہا کہ سب سے پہلے ہندو مسلم دونوں میں جو رشتے ہے اُن کو بحال کرنا تھا۔اسی لیے آج مارکیٹ دوبارہ پہلے کی طرح آباد ہو گئی ہے۔

دہلی فساد: جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے ’گوکل پوری ٹائر مارکیٹ‘ کی دکانوں کا تعمیری کام مکمل

جمعیت علماء ہند کے قومی سیکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی نے بتایا کہ ہمارا مقصد بلا تفریق مذہب و ملت فلاح و بہبود کے کام کرنا ہے۔جس میں جمعیتہ علماء ہند ہمہ وقت تیار رہتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ24 فروری کو مارکیٹ میں آگ زنی کی گئی تھی۔آج 24 جولائی ہے۔ہم اس جلے ہوئے ماحول میں کھڑے ہوئے ہیں جو اب خوشیوں میں تبدیل ہو چکا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ ہم نے ان دکانداروں کے آنسوؤں کو دیکھا ہے اور ان کے درد کو محسوس کیا ہے۔جمعیت کے پاس جب یہ لوگ آئے تو مولانا محمود مدنی نے انکی درخواست کو قبول کیا۔تاہم آج 97 دکانوں کا تعمیری کام مکمل ہو چکا ہے دکاندار دوبارہ سے اپنا کاروبار کر رہے ہیں۔اُنہوں نے بتایا کہ مارکیٹ کی کمیٹی کے اِسرار پر اور سبھی کے مشورہ سے یہ طے پایا کہ اب یہ مارکیٹ جمعیت ٹائر مارکیٹ مدنی نگر گوکل پوری کے نام سے جانی جائیگی۔

دہلی فساد: جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے ’گوکل پوری ٹائر مارکیٹ‘ کی دکانوں کا تعمیری کام مکمل

مارکیٹ کا دورہ کرنے آئی ڈی ایم،ششی کوشل نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آج ہمیں مارکیٹ کی دکانوں پر بورڈ نظر آرہے ہیں،خوشحالی نظر آرہی ہے جو خوش آئند بات ہے۔انہوں نے قومی يكجہتی کا پیغام دیتے ہوئے کہا کہ ہم سب ہندوستانی ہے ایک دوسرے کے تعاون سے ہی ہم ترقّی کی راہوں پر گامزن ہوں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جن فساد متاثرین کو ابھی تک معاوضہ نہیں مل پایا ہے دوبارہ سے جلد ہی یہ کام شروع کردیا جائے گا۔

    Published: 24 Jul 2020, 8:53 PM
    next