آن لائن نظام کے ساتھ جمعیۃ علماء ہند کی نئی ویب سائٹ کا افتتاح

ہمارا عز م ہے کہ اپنے نوجوانوں کو منظم کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے اور جمعیۃ یوتھ کلب کو مضبوط کریں گ

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

پریس ریلیز

نئی دہلی: جمعیۃ علما ء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی نے آج دوپہر بارہ بجے یوٹیوب پر پریمیر ویڈیو کے ذریعہ جمعیۃ کی نئی ویب سائٹ کا افتتاح کیا۔یہ بات جمعیۃ کی جاری کردہ پریس ریلیز میں کہی گئی ہے۔

ریلیز کے مطابق اس ویب سائٹ پر جمعیۃ علماء ہند کے بہت سارے کاموں اور پروگراموں کو آن لائن کیا گیا ہے،ساتھ ہی تنظیم کی سرگرمیوں میں مالی تعاون پیش کرنے والے اصحاب خیر اس ویب سائٹ پر آکر آن لائن رقم ٹرانسفر کرسکیں گے۔ ویب سائٹ پر ملک بھر میں پھیلے جمعیۃ علماء ہند کی مرکزی مجلس عاملہ و مجلس منتظمہ کے ارکان کے نام مع پتہ اور فون نمبر بھی دستیاب ہیں،جس کے ذریعہ سے کسی بھی حلقے میں جمعےۃ کے ذمہ دارو ں سے رابطہ کیا جاسکتا ہے۔اس ویب سائٹ کا پتہ jamiat.org.in ہے۔

ویب سائٹ کا افتتاح کرتے ہوئے مولانا محمود مدنی نے کہا کہ جمعیۃ علماء ہند کی ویب سائٹ تو پہلے سے بھی چل رہی ہے تاہم اس ویب سائٹ کو نئے انداز میں پیش کیا گیا ہے، انھوں نے کہا کہ جمعےۃ علماء ہند کا باضابطہ قیام گرچہ 1919ء میں عمل میں آیا تاہم علماء کی یہ جماعت الگ الگ ناموں سے طویل عرصے سے کام کرتی چلی آرہی تھی،1919ء میں یہ فیصلہ ہوا کہ کام کو منظم طریقے سے انجام دیا جائے چنانچہ اس کے تحت اس جماعت کی باضابطہ بنیاد رکھی گئی۔ آج اس جماعت کو سو سال ہوگئے، سو سال کا یہ سفر اس شان سے ہوا ہے کہ آج اس کے ایک کروڑ بیس لاکھ پرائمری ممبر ان ہیں، سترہ سو سے زائد اس کی مقامی اور صوبائی یونٹیں ہیں جو الگ الگ جگہوں پر کام کررہی ہے۔

مولانا مدنی نے کہا کہ اس جماعت کے قائم کرنے والوں نے اسلام اور شعائر اسلام کے تحفظ کو سب سے بنیادی مقصد قرار دیا تھا جس پر آج بھی وہ قائم ہے، جمعیۃ علماء ملک او رملت کے ہر شعبہ حیات میں رہ نمائی کا فریضہ انجام دے رہی ہے، جمعےۃ علماء کو یہ امتیازی شان حاصل ہے کہ وہ مسلمانوں کی فکری رہ نمائی کے فریضے کو انجام دیتی ہے،بالکل اسی نہچ پر جس پر اس کے اکابر نے انجام دیا تھا۔

مولانا مدنی نے کہا کہ جمعیۃ علما ء ہند ملک میں مظلوموں، بے سہارا لوگوں کے لیے کام کرتی ہے،یہ اس کی خصوصیت ہے کہ آپ کی رقم ڈائریکٹ غریبوں تک پہنچتی ہے، زکوۃ کی رقم کسی اور فنڈ میں خرچ نہیں کی جاتی۔ ددسرا فائدہ یہ ہے کہ جب جمعیۃ علماء ہند لوگوں تک آپ کے ذریعہ سے پہنچے گی توجب فکری مسئلے میں لوگو ں کو منظم کرنے کے لیے وہ لوگوں کے درمیان جائے گی تو اس کا وزن زیادہ ہوگا۔

مولانا مدنی نے بتایاکہ پچھلے تین چار سالوں سے ہم نے نوجوانوں کو جسمانی اور فکری طور پر منظم کرنے کا کام شروع کیا ہے۔ ہمارا عز م ہے کہ اپنے نوجوانوں کو منظم کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے اور جمعیۃ یوتھ کلب کو مضبوط کریں گے۔ ہم نے اسے ٹھان لیا ہے کہ مسلمانوں کا سب سے آرگنائزرڈگروپ بنائیں گے۔

next