کیا سمیر وانکھڈے مسلمان ہیں؟

نواب ملک نے برتھ سرٹیفکیٹ کی فوٹو کاپی شئیر کرتے ہوئے لکھا ہے ’سمیر داؤد وانکھڈے‘ کا یہاں سے شروع ہوا فرضی واڑا۔ ایک دوسری تصویر شئیر کرتے ہوئے انہوں نے لکھا ہے ’پہچان کون۔‘

سمیر وانکھڈے، تصویر آئی اے این ایس
سمیر وانکھڈے، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

کروز منشیات معاملہ میں روز نئے نئے انکشافات کے بعد یہ معاملہ الجھتا جا رہا ہے۔ کل اس معاملہ میں گواہ نمبر ایک پربھاکر کا بیان آیا تھا جس میں کئی کروڑ کے لین دین کی بات بتائی گئی تھی، جس میں این سی بی کے زونل ڈائریکٹر سمیر وانکھیڈے کا بھی ذکر تھا۔ اب مہاراشٹر کے وزیر اور این سی پی کے رہنما نواب ملک نے ٹوئٹ کر کے سمیر وانکھڈے کے مذہب اور ذات پر ہی سوال کھڑے کر دیئے ہیں۔

نواب ملک نے ایک برتھ سرٹیفکیٹ (پیدائشی سرٹیفکیٹ) کی کاپی اپنے ٹوئٹر پر شئیر کی ہے اور لکھا ہے ’پہچان کون۔‘ آج تک نیوز پورٹل پر شائع خبر کے مطابق سمیر وانکھڈے پر الزام لگایا جا رہا ہے کہ انہوں نے ذات کا فرضی سرٹیفکیٹ بنوا کر سرکاری نوکری حاصل کی ہے۔ یہ دعوی کیا جا رہا ہے کہ یہ سرٹیفکیٹ سمیر وانکھڈے کا ہے اور اس میں والد کے نام کی جگہ ’داؤد‘ لکھا ہے جب کے مذہب کے کالم میں ’مسلم‘ لکھا ہے۔


خبر کے مطابق مرکزی وزیر رام داس اٹھاولے نے سمیر کی حمایت کی ہے اور سمیر پر لگے تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے اور لکھا ہے کہ دلت افسر کو نشانہ بنانا ٹھیک نہیں ہے۔ اٹھاولے نے سمیر وانکھڑے کے کام کی بھی تعریف کی ہے۔

وہیں نواب ملک نے برتھ سرٹیفکیٹ کی فوٹو کاپی شئیر کرتے ہوئے لکھا ہے ’سمیر داؤد وانکھڈے‘ کا یہاں سے شروع ہوا فرضی واڑا۔ ایک دوسری تصویر شئیر کرتے ہوئے انہوں نے لکھا ہے ’پہچان کون۔‘


دوسری جانب سمیر وانکھڈے کے لئے مشکلیں بڑھتی جا رہی ہیں۔ خبروں کے مطابق این سی بی کے ایک کارکن نے دعوی کیا ہے کہ سمیر نے پہلے کسی ڈاکٹر عائشہ نام کی خاتون سے شادی کی تھی اور اس کی تصاویر بھی شئیر کی جا رہی ہے اور اس تصویر کو سمیر وانکھڈے کے نکاح کے وقت کی بتائی جا رہی ہے۔ واضح رہے مراٹھی اداکارہ کرانتی ریڈکر سمیر کی بیوی ہیں۔ وہیں سمیر وانکھیڈے نے ان سبھی الزامات کو بے بنیاد اور من گھڑت بتایا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔