ہندوستان نے چینی میڈیا کو من گھڑت رپورٹنگ سے بچنے کا مشورہ دیا

ہندوستان نے چینی میڈیا اداروں کی جانب سے قومی سلامتی مشیر اجیت ڈووال کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے پر سخت اعتراض کا اظہار کیا ہے اور ان سے من گھڑت رپورٹنگ سے بچنے کی اپیل کی

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: ہندوستان نے چینی میڈیا اداروں کی جانب سے قومی سلامتی مشیر اجیت ڈووال کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے پر سخت اعتراض کا اظہار کیا ہے اور ان سے من گھڑت رپورٹنگ سے بچنے کی اپیل کی۔

وزارت خارجہ نے منگل کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ہم نے چین کے سرکاری میڈیا بالخصوص چائنا ڈیلی اور ہوآنچی شباؤ (گلوبل ٹائمز) میں شائع رپورٹنگ کو دیکھا ہے جن میں قومی سلامتی مشیر اجیت ڈووال کے حوالے سے کچھ باتیں کہی گئیں ہیں۔ یہ رپورٹنگ پوری طرح سے جھوٹی اور سچائی سے اور ثبوتوں سے دور کا بھی اس کا واسطہ نہیں ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ’’ہم میڈیا سے ایسی من گھڑت رپورٹنگ سے بچنے کی اپیل کرتے ہیں۔ چین کی فوج نے کل رات دعوی کیا تھا کہ ہندوستانی فوجیوں نے پینگانگ جھیل کے نزدیک حقیقی کنٹرول لائن عبور کرکے ہوا میں گولیاں چلائیں۔‘‘

انڈین فوج نے یہاں ایک بیان جاری کرکے کہا ہے کہ چینی فوج دوطرفہ معاہدے کی کھلی خلاف ورزی کررہی ہے۔ چینی حکومت حقیقی کنٹرول لائن پر اس کے فوجیوں کی اشتعال انگیز سرگرمیوں کو چھپانے کے لئے گمراہ کرنے والے بیان دے رہی ہے جبکہ ہندوستانی فوجیوں نے کبھی بھی حقیقی کنٹرول لائن پر قبضہ کرنے کی کوشش نہیں کی۔

بیاں میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان حقیقی کنٹرول لائن پر تناؤ کم کرنے اور صورتحال معمول پر لانے کے لئے پرعزم ہے۔ لیکن چین مسلسل اشتعال انگیز سرگرمیوں میں ملوث ہے۔ بیان میں زور دے کر کہا گیا ہے کہ ہندوستانی فوج نے کبھی بھی ایل اے سی پر قبضہ کرنے کی کوشش نہیں کی اور نہ ہی کبھی فائرنگ سمیت کوئی اشتعال انگیز کارروائی کی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ فوج سرحد پر امن اور استحکام قائم کرنے کے لئے پرعزم ہے لیکن وہ قومی یکجہتی اور اقتدار اعلی پر کسی بھی قیمت پر سمجھوتہ نہیں کرے گی۔

    next