یوپی انتخابات میں بی جے پی دو ہندسوں میں سمٹ کر رہ جائے گی: کرن مے نندا

مغربی اتر پردیش کی 117 اسمبلی سیٹوں کا جائزہ لینے مرادآباد ڈویژن میں ہفتہ کو یہاں پہنچے نندا نے نامہ نگاروں سے کہا کہ مہنگائی اور بے روزگاری کے مسئلہ پر عوام میں کافی ناراضگی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

رام پور: سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے قومی نائب صدر اور راجیہ سبھا کے سابق رکن پارلیمنٹ کرن مے نندا نے اتر پردیش کی موجودہ یوگی حکومت کے خلاف لوگوں میں زبردست غصہ کا حوالہ دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی آئندہ اسمبلی انتخابات میں دو ہندسوں میں سمٹ کر رہ جائے گی۔

مغربی اتر پردیش کی 117 اسمبلی سیٹوں کا جائزہ لینے مرادآباد ڈویژن میں ہفتہ کو یہاں پہنچے نندا نے نامہ نگاروں سے کہا کہ مہنگائی اور بے روزگاری کے مسئلہ پر عوام میں کافی ناراضگی ہے۔ جائزہ میٹنگ کے بعد نندا نے ایس پی رکن پارلیمنٹ اعظم خان کی اہلیہ اور رام پور کی رکن اسمبلی ڈاکٹر تعظیم فاطمہ اور ان کے صاحبزادے ڈاکٹر ادیب اعظم سے دیر شام ملاقات کر کے ان کی خیریت پوچھی۔ قابل غور ہے کہ اعظم خان کو مالی بے ضابطگیوں کے مقدمات میں عدالتی کارروائی کا سامنا ہے اور وہ اس وقت جیل میں ہیں۔


اپنی رہائش گاہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے نندا نے کہا کہ ایس پی کی تنظیمی طاقت میں اضافہ ہوا ہے۔ پارٹی مرادآباد ڈویژن کی تمام سیٹوں پر کامیابی حاصل کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ریاست بھر میں ایس پی کی انتخابی تیاریوں کے جائزے میں یہ واضح ہو گیا ہے کہ اکھلیش یادو بھاری اکثریت کے ساتھ دوبارہ وزیر اعلیٰ بن رہے ہیں۔ اس کی واحد وجہ سماج کے تمام طبقات میں بی جے پی کے خلاف شدید ناراضگی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سماج کے مفاد میں کام کرنے والے اعظم خان کے خلاف حکومت نے جس طرح قانونی کارروائی کی ہے، اسی طرح پوری ریاست میں فرضی کیس لگا کر بے قصور لوگوں کو جیل ڈالا گیا ہے۔ اعظم خان کی مثال دیتے ہوئے نندا نے کہا، ''ہمارے ملک کا سسٹم اچھا نہیں ہے۔ اگر ٹھیک ہوتا تو اعظم بھائی جیل میں نہ ہوتے۔ اس کا براہ راست اثر عدلیہ پر لوگوں کے اعتماد پر پڑا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ عدلیہ غیر جانبدار ہو۔


تینوں زرعی قوانین کو واپس لینے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ اتر پردیش اور پنجاب میں بی جے پی سمجھ چکی ہے کہ اس کے کھاتے میں کوئی سیٹ نہیں آئے گی۔ خاص طور پر مغربی اتر پردیش میں بی جے پی کا صفایا ہونا یقینی ہے۔ اسی لیے ڈر کے مارے بی جے پی نے ان قوانین کو واپس لے لیا ہے۔ نندا نے کہا کہ یہ پہلی بار ہوا ہے کہ بی جے پی کو لوگوں سے خوف پیدا ہوا ہے اور یہ ملک کے کسانوں کی وجہ سے ہواہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔