تبلیغی جماعت کے لوگوں کو جمعیۃ علماء ہند کی اہم نصیحت

جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا ارشد مدنی نے عوام، خصوصاً تبلیغی جماعت سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے کہا ہے کہ کورونا سے لڑائی صرف اور صرف سوشل ڈسٹنسنگ، احتیاط اور بیداری کے سہارے لڑی جا سکتی ہے۔

جمعیۃ علماء ہند کے قومی صدر مولانا سید ارشد مدنی
جمعیۃ علماء ہند کے قومی صدر مولانا سید ارشد مدنی
user

قومی آوازبیورو

جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے آج تبلیغی جماعت سے وابستہ افراد اور ان کے رابطے میں آنے والے لوگوں کے لیے انتہائی اہم اور نصیحت پر مبنی اپیل کی گئی ہے۔ اپیل میں کہا گیا ہے کہ تبلیغی جماعت سے جڑے لوگ اور ان کے رابطہ میں آئے افراد اگر تھوڑا بھی تکلیف محسوس کر رہے ہیں یعنی اگر طبیعت ذرا بھی ناساز ہے تو وہ خود صحت اہلکار سے رابطہ کریں اور کورونا کے خلاف جنگ میں انتظامیہ کا تعاون کریں۔

جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا ارشد مدنی نے عوام، خصوصاً تبلیغی جماعت سے تعلق رکھنے والوں لوگوں سے کہا ہے کہ کورونا سے لڑائی صرف اور صرف سوشل ڈسٹنسنگ، احتیاط اور بیداری کے سہارے لڑی جا سکتی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ "جو بھی شخص اپنی طبیعت ناساز محسوس کرے، یا کسی کو بھی یہ محسوس ہو کہ وہ جانے انجانے کسی کورونا انفیکشن والے شخص کے رابطے میں رہا ہو، وہ خود بخود محکمہ صحت کے اہلکاروں سے رابطہ کرے اور ان کی ہدایات پر عمل کرے۔"

مولانا ارشد مدنی نے کورونا کے خلاف سبھی کو لڑائی کے لیے متحد رہنے کی گزارش کرنے کے ساتھ ساتھ انتظامیہ سے بھی کچھ اہم گزارش کی۔ انھوں نے انتظامیہ سے کہا کہ وہ کورونا وبا کو لے کر کسی مذہبی منافرت کے مقصد سے ہو رہی غلط تشہیر سے الگ ہٹ کر صرف انسانی بنیاد پر کارروائی کرے کیونکہ کورونا کسی خاص مذہب سے جڑی ہوئی وبا نہیں ہے۔ یہ پورے نسل انسانی کے لیے خطرہ ہے اور جو کوئی بھی کورونا کے خلاف اس لڑائی کو کمزور کرے، اس کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہیے۔

مولانا ارشد مدنی نے ابھی حال میں پریاگ راج میں سرزد ہوئے ایک واقعہ کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح سے ایک پرتشدد واقعہ کو تبلیغی جماعت سے جوڑا گیا، پھر بعد میں مقامی انتظامیہ کے ذریعہ واقعہ کی تردید ہوئی، وہ شرمناک تھا۔ انھوں نے انتظامیہ سے گزارش کی کہ افواہ پھیلانے والوں کے خلاف سخت کارروائی ہونی چاہیے تاکہ کوئی افواہ پھیلانے کی کوشش نہ کرے۔