عوام پولیس سے انصاف کی امید کیسے کر سکتے ہیں؟:اکھلیش کا سوال

بی جے پی اقتدار میں کوئی دن ایسا نہیں جاتا جب اتر پردیش میں اغوا، لوٹ، قتل اور عصمت دری کے واقعات پیش نہ آئیں۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کی قیادت میں لکھنؤ میں منعقد ہوئی ڈی جی پی کانفرنس کے درمیان سماجو دی پارٹی(ایس پی) سربراہ اکھلیش یادو نے اترپردیش کے نظم ونسق پر سوال کھڑا کرتے ہوئے ہفتہ کو کہا کہ جب مرکزی وزیر داخلہ کے ساتھ لکھیم پور واقعہ کے ملزم کا کنبہ اسٹیج شیئر کرے تو پولیس سے انصاف کی توقع کیسے کی جاسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم سے لے کر مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر اعلی ان دنوں سبھی لکھنؤ کے ڈی جی پی کانفرنس میں شرکت کررہے ہیں۔ شاندارسگنیچر بلڈنگ سماج وادی حکومت کے دور میں بنی تھی۔ وہاں قائم ڈائل 100 اب 112 کو برباد کردیا گیا۔ پولیسنگ انڈکس 2021 کے مطابق اترپردیش سب سے نیچے کے زمرے میں آتا ہے۔


بہار پولیسنگ میں سب سے کم اسکور(5.74)پر تھا اس کے بعد اترپردیش کا مقام5.82 پر ہے۔ یوپی کو کوآپریٹیو اور دوستانہ پولیس میں 5.59اور غیرجانبدارانہ پولیسنگ میں 5.27 اور پولیس جواب دہی میں 5.80 اسکور کیا ہے۔ سروے کے مطابق اترپردیش کے لوگوں کو پولیس پر سب سے کم اعتماد ہے۔

اکھلیش نے کہا کہ بی جے پی اقتدار میں کوئی دن ایسا نہیں جاتا جب اضلاع میں اغوا، لوٹ، قتل اور عصمت دری کے واقعات پیش نہ آئیں۔ پولیس حراست میں اموات اور فرضی انکاونٹروں کے معاملے میں تو اترپردیش کی ملک اور دنیا میں بدنامی ہوئی ہے۔وزیر اعلی دعوے تو بڑے برے کرتے ہیں لیکن نتیجہ صفر رہتا ہے۔ ریاست میں نظم ونسق نام کی کوئی چیز نہیں رہ گئی ہے۔ جرائم پر کنٹرول نہیں ہورہا ہے۔بی جے پی اقتدار میں مجرمین بے خوف ہیں اور انہیں اقتدار کا تحفظ مل رہا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔