ہوم گارڈ ڈیوٹی گھپلہ: حکومت نے جانچ کے لئے تین رکنی ٹیم تشکیل دی

نوئیڈا کے سات تھانوں میں گزشتہ مئی اور جون میں ہوم گارڈ کی ڈیوٹی دکھا کر ان کے تنخواہ کی ادائیگی کے نام پر 8 لاکھ روپئے نکالے گئے ہیں

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

لکھنؤ: اترپردیش حکومت نے ہوم گارڈ کو تنخواہ دینے کے معاملے میں ہوئے گھپلے کی جانچ کے لئے تین رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ اترپردیش پاور کارپوریشن میں پی ایف رقم گھپلے کے بعد اب ہوم گارڈ کے جوانوں کی فرضی ڈیوٹی دکھا کر رقم ہڑپنے کا نیا گھپلہ سامنے آیا ہے۔ گوتم بدھ نگر میں دو مہینے کی جانچ میں اس گھپلے کا پردہ فاش ہوا ہے۔ اس گھپلے کی جانچ کے لئے حکومت نے تین رکنی کمیٹی تشکیل کر کے کمیٹی سے دس دنوں کے اندر رپورٹ طلب کی ہے۔

کمیٹی میں ڈائریکٹر جنرل آف ہوم گارڈس سنیل کمار، مرزاپور کے ضلع کمانڈنٹ شیلیندر پرتاپ سنگھ اور باغپت کی کمانڈنٹ نیتا بھارتی کورکھا گیا ہے۔ کمیٹی جانچ کے لئے نوئیڈا پہنچ گئی ہے۔ انسپکٹر جنرل آف پولس او پی سنگھ نے گوتم بدھ نگر کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولس ویبھ کو ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دیا ہے۔

ہوم گارڈ ڈیپارٹمنٹ کے پرنسپل سکریٹری انل کمار کا کہنا ہے کہ ابھی نوئیڈا میں اس طرح کی گڑبڑی کی اطلاع ملی ہے۔ ہوسکتا ہے کہ دیگر اضلاع میں بھی اسی طرح کے معاملے ہو رہے ہوں، ضرورت پڑنے پر دیگر اضلاع کی بھی جانچ کرائی جائے گی۔ نوئیڈا کے سات تھانوں میں گزشتہ مئی جون میں ہوم گارڈ کی ڈیوٹی دکھا کر ان کے تنخواہ کی ادائیگی کے نام پر 8 لاکھ روپئے نکالے گئے ہیں۔

next