راجستھان کے کئی اضلاع میں بھاری بارش کے سبب سیلاب جیسے حالات

راجستھان کے کوٹہ، بوندی، باراں، پرتاپ گڑھ اور جھالاواڑ میں کل رات سے موسلادھار بارش ہو رہی ہے۔ کوٹہ ضلع كیٹھون میں راحتی کاموں کے لیے فوج کو بلانا پڑا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جے پور: راجستھان کے کئی اضلاع میں کل رات سے ہو رہی تیز بارش کے سبب سیلاب جیسی صورتحال پیدا ہوگئی ہے جس کے پیش نظر ضلع کوٹہ میں فوج طلب کرنی پڑگئی ہے۔ کوٹہ، بوندی، باراں، پرتاپ گڑھ اور جھالاواڑ میں کل رات سے موسلادھار بارش ہو رہی ہے۔ کوٹہ ضلع كیٹھون میں راحتی کاموں کے لیے فوج کو بلانا پڑا ہے۔

راجستھان کے کئی اضلاع میں بھاری بارش کے سبب سیلاب جیسے حالات

هاڑوتی علاقے میں چمبل، پاروتی، كالی سندھ اور پروون دریا طغیانی پر ہیں۔ اس علاقے کے سبھی چھوٹے بڑے ڈیم پانی سے بھر چکے ہیں۔ اس علاقے میں گھروں میں پانی داخل ہو گیا اور سڑکیں ڈوب ہو گئیں۔ كیٹھون میں حالت سب سے زیادہ خراب بتائی گئی ہے جہاں فوج طلب کر لی گئی ہے۔ فوج کے جوان گھر گھر کھانے پہنچا رہے ہیں اور انہیں محفوظ مقام پر منتقل کرنے میں مصروف ہیں۔ میونسپل کے غوطہ خور اور ڈیزاسٹر ریلیف کارکن بھی امدادی کام میں مصروف ہیں۔ محکمہ موسمیات کے مطابق هاڑوتی میں اب تک 1000 ایم ایم بارش ہو چکی ہے اور بارش اب بھی جاری ہے۔

کوٹہ ضلع کے بوركھنڈی گاؤں میں پانی بھر گیا ہے۔ گاؤں والوں کو محفوظ مقام پر لے جایا جا رہا ہے۔ وہیں چندلوهی دریا سے مگرمچھوں کے باہر نکلنے کے سبب گرد و نواح کے گاؤں والوں کو گھروں کی چھتوں پر پناہ لینی پڑ رہی ہے۔ هاڑوتی علاقے میں زیادہ تر گاؤں اور قصبوں میں نچلی بستیاں ڈوب ہو چکی ہیں جبکہ باراں میں کئی کچے مکان گرنے کی اطلاعات ہیں۔

هاڑوتی علاقے کے بوندی میں بھی حالات قابو سے باہر ہیں۔ کئی گاؤوں میں پانی بھر جانے سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔ دوسری جانب محکمہ موسمیات نے ریاست کے 22 اضلاع میں آئندہ 24 گھنٹوں میں بھاری بارش کی وارننگ دی ہے۔ تیز بارش کے سبب بيسل پور ڈیم میں 311.20 آر ایل ڈی پانی آ چکا ہے۔ بناس ندی میں بھی طغیانی آنے سے ساحلی گاؤں میں صورتحال بگڑ رہی ہے۔