نفرت انگیز قوم پرستی، ہندوستان کی چھ سالہ حصولیابی، بنگلہ دیش آگے جانے کو تیار: راہل گاندھی

رپورٹ کے مطابق ہندوستان جنوبی ایشیا میں تیسرا سب سے غریب ملک بننے کی جانب گامزن ہے اور صرف پاکستان-نیپال کی فی کس جی ڈی پی ہی ہندوستان سے کم ہے، جبکہ بنگلہ دیش سمیت کئی پڑوسی ممالک ہندوستان سے آگے ہیں

راہل گاندھی، تصویر اے آئی سی دہلی
راہل گاندھی، تصویر اے آئی سی دہلی
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے ملک کی فی کس مجموعی گھریلو مصوعات کی ماند پڑ چکی رفتار پر طنز کیا ہے اور کہا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں چھ سال کی نفرت انگیز قومی پرستی کی یہ حصولیابی ہے کہ ہمارا پڑوسی ملک بنگلہ دیش اس معاملہ میں ہم سے آگے نکلنے کو تیار ہے۔

راہل گاندھی نے ایک خبر کے گرافکس کو شیئر کرتے وہئے ٹوئٹ کیا، ’’بی جے پی کی نفرت انگیز قوم پرستی کی حصولیابی، بنگلہ دیش ہندوستان سے آگے نکلنے کو تیار۔‘‘

خیال رہے کہ اس تقویم سال میں بنگلہ دیش فی کس مجموعی گھریلو مصنوعات (جی ڈی پی) کے معاملے میں ہندوستان کو شکست دینے کے لئے تیار ہے۔ اس کی سب سے بڑی وجہ کوویڈ۔19 اور لاک ڈاؤن کے سبب ہندوستانی معیشت کو ہونے والا نقصان ہے۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) - ورلڈ اکنامک آؤٹ لک (ڈبلیو ای او) کے مطابق بنگلہ دیش کی فی کس جی ڈی پی میں 2020 میں 4 فیصد اضافے کے ساتھ 1888 تک جانے کی توقع ہے، جبکہ ہندوستان کی فی کس جی ڈی پی میں 10.5 فیصد کمی واقع ہو کر اس کے 1877 رہ جانے کی امید ہے، جو گزشتہ چار سالوں میں سب سے کم ہے۔

دونوں ممالک کی جی ڈی پی کے یہ اعداد و شمار موجودہ قیمتوں پر مبنی ہیں۔ آئی ایم ایف - ڈبلیو ای او کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان جنوبی ایشیا کا تیسرا غریب ترین ملک بننے کے دہانے پر ہے۔ صرف پاکستان اور نیپال کی فی کس جی ڈی پی ہندوستان سے کم ہوگی جبکہ بنگلہ دیش، بھوٹان، سری لنکا اور مالدیپ جیسے ممالک ہندوستان سے آگے ہوں گے۔

Published: 14 Oct 2020, 11:11 AM
next